بھارتی لیگ سے معاہدہ برقرار ہے، شکیل عباسی

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 15 دسمبر 2012 ,‭ 14:38 GMT 19:38 PST
شکیل عباسی

شکیل عباسی کو حالیہ چیمپیئنز ٹرافی کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا ہے۔

پاکستان کے ہاکی اولمپیئن شکیل عباسی نے واضح کردیا ہے کہ بھارتی ورلڈ سیریز ہاکی سے ان کا تین سالہ معاہدہ برقرار ہے اور وہ صرف اسی صورت میں یہ لیگ نہیں کھیلیں گے جب اس دوران پاکستانی ٹیم کوئی میچ کھیل رہی ہوگی۔

یاد رہے کہ ایف آئی ایچ اور پاکستان ہاکی فیڈریشن اس لیگ کو تسلیم نہیں کرتی اور شکیل عباسی پر اس میں حصہ لینے کی پاداش میں دس لاکھ روپے جرمانہ عائد کیا گیا تھا۔ تاہم بعد میں اسے نہ صرف کم کردیاگیا بلکہ فیڈریشن کو پاکستانی ٹیم مضبوط کرنے کی غرض سے تجربہ کار شکیل عباسی کو ٹیم میں بھی شامل کرنا پڑا۔

شکیل عباسی کو حالیہ چیمپیئنز ٹرافی ہاکی ٹورنامنٹ میں بہترین کھلاڑی کے اعزاز سے نوازاگیا ہے۔

شکیل عباسی نے بی بی سی کو دیئے گئے انٹرویو میں کہا کہ وہ اس لیگ کے قانونی یا غیرقانونی ہونے کی بحث میں نہیں پڑنا چاہتے کیونکہ جس وقت انہوں نے یہ معاہدہ کیا تھا اسوقت اس لیگ کو ایف آئی ایچ نے غیرقانونی نہیں کہا تھا۔ ان کا اس لیگ سے تین سال کا معاہدہ ہے اور وہ پیشگی رقم بھی لے چکے ہیں۔

شکیل عباسی نے کہا کہ ایف آئی ایچ پاکستانی ہاکی کے لیے کچھ نہیں کررہی ہے اور انہیں امید ہے کہ جب بھارتی لیگ میں کھیلنے کا وقت آئے گا تو کوئی مسئلہ پیدا نہیں ہوگا اور کوئی نہ کوئی راستہ نکل آئے گا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان ہاکی فیڈریشن کے ارباب اختیار کو یہ اچھی طرح معلوم ہے کہ کھلاڑی جب تک بیرون ملک لیگ نہیں کھیلیں گے ان کی مالی حالت بہتر نہیں ہوسکتی۔

شکیل عباسی نے کہا کہ اگر پاکستانی ٹیم کو ان کی ضرورت ہوئی اور ٹیم اسوقت کوئی ٹورنامنٹ کھیل رہی ہوگی تو وہ لیگ نہیں کھیلیں گے۔

شکیل عباسی نے کہا کہ ورلڈ کپ اور اولمپک گولڈ میڈلز پاکستانی ہاکی ٹیم کے کھلاڑیوں کو تو فائدہ پہنچاسکتے ہیں لیکن اگر پاکستانی ہاکی کو دوبارہ عروج پر لانا ہے تو اس کے لیے ڈپارٹمنٹس کو اپنا کردار ادا کرنا ہوگا انہیں کھلاڑیوں کو ملازمتیں دینی ہونگی۔ جس طرح ڈپارٹمنٹس اپنی ٹیمیں ختم کررہے ہیں ان حالات میں پاکستان کبھی بھی ہاکی میں کھویا مقام دوبارہ حاصل نہیں کرسکتا۔

شکیل عباسی نے کہا کہ کوئی بھی کھلاڑی اس وقت تک اچھی کارکردگی کا مظاہرہ نہیں کرسکتا جب تک اسے اعتماد نہ دیا جائے۔ کھلاڑی فوراً نہیں بن جاتا ہے اسے تجربہ حاصل کرنے اور کھیل میں نکھار لانے میں کئی سال لگ جاتے ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔