دلیپ بولے’تم نے تو گول ہی کردیا‘

آخری وقت اشاعت:  ہفتہ 15 دسمبر 2012 ,‭ 14:33 GMT 19:33 PST
اصلاح الدین

اصلاح الدین دلیپ کمار کو بے حد پسند کرتے ہیں

بالی وڈ کے معروف اداکار دلیپ کمار نہ تو اولمپیئن ہیں نہ انٹرنیشنل کھلاڑی لیکن کھیلوں سے ان کی والہانہ محبت سب کو معلوم ہے۔ پاکستانی کرکٹ ٹیم ہو یا ہاکی ٹیم وہ جب بھی بھارت گئی پاکستانی کھلاڑی دلیپ کمار سے مل کر ان کی سحرانگیزی میں کھوگئے۔

پاکستان کی ہاکی ٹیم کے سابق کپتان اصلاح الدین بھی انہی میں سے ایک ہیں جو دلیپ کمار سے دیرینہ تعلقات اور ان سے وابستہ حسین یادوں کو اپنے جیتے ہوئے طلائی تمغوں سے کم نہیں سمجھتے۔

اصلاح الدین کہتے ہیں کہ دلیپ کمار سے ان کی پہلی ملاقات انیس سو چوہتر میں اسوقت ہوئی جب وہ ایشین الیون کے ساتھ بھارت گئے تھےاور دلیپ کمار سے ملاقات ان کی دیرینہ خواہش تھی۔

"اصلاح الدین دلیپ کمار سے دو سال قبل ہونے والی آخری ملاقات کا ذکر کرتے ہوئے کہتے ہیں کہ دلیپ کمار ان سے کہنے لگے کہ اصلاح اب وہ کچھ کچھ بھولنے لگے ہیں تو انہوں نے دلیپ صاحب سے کہا کہ کیا وہ انہیں یاد ہیں یا انہیں بھی وہ بھول گئے ہیں جس پر دلیپ کمار اپنی نشست سے کھڑے ہوئے اور انہیں گلے لگاتے ہوئے کہنے لگے’ اصلاح میاں تم نے تو گول ہی کردیا'۔"

ابھی وہ یہ سوچ ہی رہے تھے کہ یہ کیسے ممکن ہوسکے گا کہ ان کے کمرے کے دروازے پر دستک ہوئی دیکھا تو ا یک صاحب کھڑے تھے کہنے لگے انہیں اصلاح الدین سے ملنا ہے۔ پتہ چلا کہ وہ دلیپ کمار کے سیکریٹری تھے جو رات کے کھانے کی دعوت دینے آئے تھے۔

اصلاح الدین کہتے ہیں کہ انہوں نے جب یہ کہا کہ ’صاحب‘ نے بھیجا ہے تو ان کی سمجھ میں نہ آیا کہ کون ’صاحب‘ ۔ معلوم ہوا صاحب دلیپ کمار کو کہا جاتا ہے۔

اصلاح الدین کا کہنا ہے کہ دلیپ کمار اس دعوت میں ہر پاکستانی کھلاڑی سے پرجوش انداز میں ملے اور انہیں ہر پاکستانی کھلاڑی کا نام اور اس کے کھیل کے بارے میں مکمل معلومات تھیں۔

دلیپ کمار نے اس دعوت میں اصلاح الدین کو بتایا کہ جب بھی پاکستان اور بھارت کے درمیان کرکٹ اور ہاکی کے میچز ہوتے ہیں وہ اپنی شوٹنگز منسوخ کردیتے ہیں اور ان کی توجہ ان میچوں پر ہوتی ہے۔

پیشاور میں واقع دلیپ کمار کا آبائی گھر

دلیپ کمار کا تعلق پیشاور سے اور وہاں آج بھی ان کا گھر موجود ہے

اصلاح الدین کا کہنا ہے کہ پہلی ملاقات کے بعد دلیپ کمار سے ان کا تعلق ایسا بنا کہ ملاقاتوں کا سلسلہ چل نکلا اور وہ جب بھی ملتے محبت سے پیش آتے۔

اصلاح الدین دلیپ کمار سے دو سال قبل ہونے والی آخری ملاقات کا ذکر کرتے ہوئے کہتے ہیں کہ دلیپ کمار ان سے کہنے لگے کہ اصلاح اب وہ کچھ کچھ بھولنے لگے ہیں تو انہوں نے دلیپ کمار سے کہا کہ کیا وہ انہیں یاد ہیں یا انہیں بھی وہ بھول گئے ہیں جس پر دلیپ کمار اپنی نشست سے کھڑے ہوئے اور انہیں گلے لگاتے ہوئے کہنے لگے’ اصلاح میاں تم نے تو گول ہی کردیا۔‘

اصلاح الدین دلیپ کمار سے جب بھی ملتے ان سے پوچھتے کہ پاکستان سے کوئی بھی چیز اگر انہیں پسند ہو تو وہ انہیں بھجوانے میں خوشی محسوس کریں گے جس پر ایک مرتبہ دلیپ کمار نے پاکستانی کینو کھانے کی خواہش ظاہر کی۔

اصلاح الدین کہتے ہیں کہ وہ باقاعدگی سے دلیپ کمار کو کینو بھجوایا کرتے تھے۔ ایک دن انہوں نے دلیپ کمار سے پوچھا کہ یہ کینو آپ تک پہنچتے بھی ہیں یا بیچ میں ہی غائب ہوجاتے ہیں؟۔ دلیپ کمار بولے کہ نہ صرف ملتے ہیں بلکہ وہ انہیں شوق سے کھاتے ہیں اور دونوں ہاتھ اٹھاکر ان کے حق میں دعا بھی دیتے ہیں۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔