کیپ ٹاؤن ٹیسٹ: پہلا دن جنوبی افریقہ کے نام

آخری وقت اشاعت:  بدھ 2 جنوری 2013 ,‭ 17:45 GMT 22:45 PST

جنوبی افریقہ کو نیوزی لینڈ پر دو سو سات رنز کی برتری حاصل ہے اور پہلی اننگز میں اس کی سات وکٹیں باقی ہیں

کیپ ٹاؤن میں کھیلے جانے والے پہلے ٹیسٹ میچ کے پہلے دن کھیل کے اختتام پر جنوبی افریقہ نے نیوزی لینڈ کے خلاف پہلی اننگز میں تین وکٹ کے نقصان پر دو سو ترپن رنز بنا لیے۔

پہلے دن کھیل کے اختتام پر آلویرو پیٹرسن اور اے بی ڈویلیئرز کریز پر موجود تھے اور دونوں نے بالترتیب ایک سو تین اور انیس رنز بنائے تھے۔

کلِک میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

جنوبی افریقہ کو نیوزی لینڈ پر دو سو سات رنز کی برتری حاصل ہے اور پہلی اننگز میں اس کی سات وکٹیں باقی ہیں۔

نیوزی لینڈ کی طرح جنوبی افریقہ کا آغاز بھی اچھا نہ تھا اور صرف ایک رن کے مجوعی سکور پر گریم سمتھ ایک رن بنا کر آؤٹ ہو گئے۔

جنوبی افریقہ کے ہاشم آملہ اور پیٹرسن نے دوسری وکٹ کے لیے ایک سو سات رنز کی شراکت قائم کی۔

جنوبی افریقہ کی اننگز کی خاص بات پیٹرسن کی عمدہ بیٹنگ رہی، انہوں نے گیارہ چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے ناقابلِ شکست ایک سو تین رنز بنائے۔

جنوبی افریقہ کی جانب سے ہاشم آملہ اور یاک کیلس نے نصف سنچریاں سکور کیں۔

نیوزی لینڈ کی جانب سے ٹرینٹ بولٹ، بریس ویل اور جیمز فرینکلن نے ایک ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا۔

اس سے پہلے نیوزی لینڈ کی پوری ٹیم جنوبی افریقہ کے خلاف پہلی اننگز میں پینتالیس رنز پر ڈھیر ہو گئی تھی۔

نیوزی لینڈ کے بلے باز جنوبی افریقہ کے بالروں کی تباہ کن بالنگ کا سامنا نہ کر سکے اور اس کی وکٹیں وقفے وقفے سے گرتی رہیں۔

نیوزی لینڈ کے دس کھلاڑیوں کا سکور دوہرے ہندسے کو عبور نہ کر سکا۔

نیوزی لینڈ کی جانب سے کین ولیمسن نے سترہ رنز بنائے۔

جنوبی افریقہ کی جانب سے فلینڈر نے پانچ، مورکل نے تین جبکہ ڈیل سٹین نے تین کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

واضح رہے کہ یہ نیوزی لینڈ کا تیسرا کم ترین سکور ہے۔

حالیہ برسوں میں یہ پہلا موقع نہیں جب جنوبی افریقہ نے کیپ ٹاؤن میں کسی ٹیم کو پچاس سے کم رنز پر آؤٹ کیا ہو۔

جنوبی افریقہ نے گزشتہ برس نومبر میں کیپ ٹاؤن کے میدان پر آسٹریلیا کو سینتالیس رنز پر آؤٹ کر کے آٹھ وکٹوں سے کامیابی حاصل کی تھی۔

بدھ کو شروع ہونے والے ٹیسٹ میں نیوزی لینڈ نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔