’اے سی میلان کا میدان چھوڑنا غلط تھا‘

آخری وقت اشاعت:  پير 7 جنوری 2013 ,‭ 11:55 GMT 16:55 PST

اتوار کو بوٹنگ ’سیانا‘ کلب کے خلاف میچ میں اپنی شرٹس پر نسل پرستی کے خلاف پیغامات لکھ کر میدان میں داخل ہوئے

فٹبال کی عالمی تنظیم فیفا کے صدر سیپ بلیٹر نے کہا ہے کہ اے سی میلان کے کھلاڑیوں کو نسلی پرستی پر مبنی گالیاں سن کر میدان چھوڑ کر باہر نہیں جانا چاہیے تھا۔

اٹلی سے تعلق رکھنے والے کلب اے سی میلان کے کھلاڑی ایک اور اطالوی کلب پرو پیٹریا کے خلاف ایک دوستانہ میچ کے دوران میچ چھوڑ کر میدان سے باہر چلے گئے تھے۔

اے سی میلان کے کھلاڑیوں کا دعویٰ ہے کہ ان کی ٹیم میں شامل گھانا کے کھلاڑی کیون پرنس بوٹنگ کو پرو پیٹریا کے حامی شائقین نے نسل پرستی پر مبنی گالیاں دیں تھیں۔

فیفا کے صدر سیپ بلیٹر کا کہنا ہے کہ میدان چھوڑ کر باہر جانا کوئی حل نہیں ہے۔

اتوار کو اے سی میلان کے کھلاڑی اس معاملے پر رد عمل کے طور ایک اور کلب ’سیانا‘ کے خلاف میچ میں اپنی شرٹس پر نسل پرستی کے خلاف پیغامات لکھ کر میدان میں داخل ہوئے۔

فیفا کے صدر سیپ بلیٹر کا کہنا ہے ’میں نہیں سمجھتا کہ آپ کو یوں راہِ فرار اختیار کرنی چاہیے کیونکہ اس طرح اگر آپ ایک میچ ہار رہے ہوں تو اس سے بھی راہِ فرار اختیار کر سکتے ہیں‘۔

"اگر کھلاڑی محسوس کرتے ہیں کہ ریفری ان کے ساتھ صحیح سلوک نہیں کر رہا تو پھر میدان چھوڑنا سمجھ میں آتا ہے۔"

فٹبال ایسوسی ایشن کے ایلکس ہورن ’

سیپ بلیٹر نے کہا کہ یہ بہت نازک معاملہ ہے لیکن نسل پرستی پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہو سکتا ہے۔

فٹبال ایسوسی ایشن کے ایلکس ہورن نے کہا ’اگر کھلاڑی محسوس کرتے ہیں کہ ریفری ان کے ساتھ صحیح سلوک نہیں کر رہا تو پھر میدان چھوڑنا سمجھ میں آتا ہے‘۔

سیپ بلیٹر نے کہا کہ نسل پرستی سے متعلق معاملات کے بارے میں قوانین سخت کیے جانے چاہیں جیسا کہ ٹیم کے پوائنٹس کی کمی یا اس طرح کے دوسرے اقدامات ہی اس مسئلے کا حل ہیں۔

بوٹنگ نے میچ کے دوران گالیاں سننے کے بعد فٹبال شائقین کی جانب میدان کے اس حصے کی طرف پھینکا جو انہیں گالیاں دے رہے تھے۔

اس کے بعد مڈ فیلڈر نے اپنی شرٹ اتار دی اور حکام اور کھلاڑی میدان چھوڑ کر نکل گئے۔

اطالوی فٹبال ایسوسی ایشن نے اس معاملے کی فوری تحقیقات کا اعلان کیا ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔