سلمان، آصف کی اپیل کی سماعت جمعرات سے

آخری وقت اشاعت:  منگل 5 فروری 2013 ,‭ 14:04 GMT 19:04 PST

سپاٹ فکسنگ کیس میں سلمان بٹ کو ڈھائی سال، اٹھائیس سالہ محمد آصف کو ایک سال سزا ہوئی تھی

سپاٹ فکسنگ میں سزا یافتہ پاکستانی فاسٹ بالر محمد آصف اور سابق کپتان سلمان بٹ کی اپیلوں کی سماعت سوئٹزرلینڈ میں جمعرات سے شروع ہو رہی ہے۔

کھیلوں کی عالمی ثالثی عدالت میں محمد آصف اور سلمان بٹ کی اپیلوں کی سماعت برطانوی بیرسٹر برائن میو کریں گے۔

واضح رہے کہ نومبر 2011 میں سلمان بٹ کو دو پاکستانی بالروں محمد آصف اور محمد عامر کے ہمراہ سنہ دو ہزار دس میں انگلینڈ کے خلاف ٹیسٹ میچ کے دوران جان بوجھ کر نو بالز کروانے پر جیل بھیج دیا گیا تھا۔

سپاٹ فکسنگ کے مقدمے کی سماعت کرنے والی عدالت نے ستائیس سالہ سلمان بٹ کو ڈھائی سال، اٹھائیس سالہ محمد آصف کو ایک سال اور انیس برس کے محمد عامر کو چھ ماہ کی قید کی سزا سنائی تھی۔

سلمان بٹ اور محمد عامر کی جانب سے سپاٹ فکسنگ معاملے میں قید کی سزا کے خلاف اپیلیں کی تھیں جن کو لندن کی ایپلٹ کورٹ نے مسترد کرتے ہوئے ان کی سزا برقرار رکھی تھی۔

اسی سکینڈل میں ملوث چھتیس سالہ سپورٹس ایجنٹ مظہر مجید کو دو سال آٹھ ماہ کے لیے جیل بھیجا گیا تھا۔

محمد آصف کی وکالت روی سقول کر رہے ہیں جبکہ یاسین پٹیل سلمان بٹ کی وکالت کر رہے ہیں۔

سنہ دو ہزار دس میں انگلینڈ کے خلاف ٹیسٹ میچ کے دوران جان بوجھ کر نو بالز کروانے پر سزا یافتہ فاسٹ بالر محمد عامر نے اپنی سزا کے خلاف اپیل نہیں کی ہے۔

یاد رہے کہ پچھلے سال جون میں سلمان بٹ برطانوی جیل سے رہا ہوئے تھے جبکہ ایک سال کی پابندی کی سزا پانے والے محمد آصف مئی میں رہا ہو گئے تھے۔

ان کی رہائی سے چھ ماہ قبل محمد عامر رہا ہو کر ملک واپس آ گئے تھے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔