بھارت کو آسٹریلیا پر 192 رنز کی برتری

آخری وقت اشاعت:  پير 4 مارچ 2013 ,‭ 11:45 GMT 16:45 PST

چیتیشور پجارا اور مرلی وجے نے تین سو ساٹھ رنوں کی شراکت داری نبھائی

حیدرآباد میں جاری دوسرے کرکٹ ٹیسٹ میچ کے تیسرے دن کھیل کے اختتام پر آسٹریلیا نے اپنی دوسری اننگز میں دو وکٹوں کے نقصان پر 74 رنز بنا لیے ہیں۔

اس طرح اسے بھارت کی پہلی اننگز کی برتری ختم کرنے کے لیے مزید 192 رنز درکار ہیں جبکہ اس کی آٹھ وکٹیں باقی ہیں۔

کلِک میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

آسٹریلیا کے آؤٹ ہونے والے بلے بازوں میں فل ہیوز اور ڈیوڈ وارنر شامل تھے اور ان دونوں کو ایشون نے آؤٹ کیا۔

اس سے قبل بھارت کی پوری ٹیم اپنی پہلی اننگز میں 503 رنز بناکر آؤٹ ہوگئی اور یوں اسے آسٹریلیا پر 266 رنز کی سبقت حاصل ہوئی۔

چیتیشور پجارا کی ڈبل سنچری اور مرلی وجے کی سنچری کی بدولت بھارتی ٹیم ایک بڑا مجموعہ بنانے میں کامیاب رہی۔

پجارا نے 204 رنز بنائے جبکہ مرلی وجے نے 167 رنز کی اہم اننگز کھیلی۔ ان کے علاوہ کپتان مہندر سنگھ دھونی نے جارحانہ انداز میں 44 رنز بنائے۔

پجارا اور مرلی وجے کے درمیان 376 رنز کی شراکت داری ہوئی، جس نے بھارت کی پوزیشن کو استحکام بخشا۔

واضح رہے کہ یہ پجارا کی گیارہ ٹیسٹ میچوں میں یہ دوسری ڈبل سنچری ہے۔ اس سے قبل انھوں نے انگلینڈ کے خلاف احمدآباد میں 206 ناٹ رنز آؤٹ بنائے تھے۔

آسٹریلیا کے جانب سے گلین میکسول کو چار اور زیویئر ڈورٹی کو تین وکٹ ملے جبکہ جیمز پیٹنسن کو دو اور پیٹر سڈل کو ایک وکٹ ملی۔

آسٹریلیا نے میچ کے پہلے روز اپنی پہلی اننگز نو وکٹوں کے نقصان پر 237 رنز بنا کر ڈیکلیئر کر دی تھی۔

اس اننگز کی خاص بات کپتان مائیکل کلارک اور وکٹ کیپر میتھیو ویڈ کی پانچویں وکٹ کے لیے 145 رنز کی عمدہ شراکت تھی جس کی بدولت ہی آسٹریلوی ٹیم اس سکور تک پہنچنے میں کامیاب رہی۔

بھارت کو تین ٹیسٹ میچوں کی سیریز میں ایک صفر سے برتری حاصل ہے۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔