سری لنکا:سینٹرل کانٹریکٹ پر تنازع حل

آخری وقت اشاعت:  منگل 5 مارچ 2013 ,‭ 06:00 GMT 11:00 PST

سری لنکا کے کرکٹ بورڈ نے قومی ٹیم کے کھلاڑیوں سے معاوضوں کا تنازع حل ہونے کے بعد بنگلہ دیش کے خلاف سیریز کے لیے سکواڈ کا اعلان کر دیا ہے۔

سری لنکا کی قومی کرکٹ ٹیم کے 23 کھلاڑیوں کا سینٹرل کانٹریکٹ پر کرکٹ بورڈ سے تنازع چل رہا تھا۔

سری لنکن کے کرکٹ بورڈ کے مطابق کھلاڑی کا مطالبہ تھا کہ انہیں بورڈ کو حاصل ہونے والی آمدن میں سے زیادہ حصہ دیا جائے اور انہوں نے دھمکی دی تھی کہ بنگلہ دیش کے دورے کے لیے ریزرو ٹیم کو منتخب کیا جائے۔

اب 23 میں سے بائیس کھلاڑیوں نے سینٹرل کانٹریکٹ پر دستخط کر دیے ہیں۔ سینٹرل کانٹریکٹ پر سابق کپتان مہیلا جے وردھنے بیرون ملک ہونے کے وجہ سے دستخط نہیں کر سکے اور زخمی ہونے کی وجہ سے ٹیسٹ نہیں کھیل سکیں گے۔

اینجلو متھیوز کی کپتانی میں سولہ رکنی سکواڈ کا اعلان کر دیا گیا ہے۔

سری لنکن کرکٹ بورڈ کی جانب سے جاری ہونے والے ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ملاقات میں کھلاڑیوں نے گارنٹی فیس کی ادائیگی بحال کرنے کی درخواست کی تھی۔

بورڈ نے سال دو ہزار تیرہ میں حاصل ہونے والی آمدن کا 63 فیصد23 کھلاڑیوں کے سینٹرل کنٹریکٹ میں شامل کیا ہے اور اگر اس میں گارنٹی فیس بھی شامل کر دی جاتی تو اس صورت میں کرکٹ بورڈ کو اپنی آمدن کا 81 فیصد 23 کھلاڑیوں پر خرچ کرنا پڑا۔

خیال رہے کہ گارنٹی فیس آئی سی سی یعنی انٹرنیشنل کرکٹ کونسل ممبر ممالک کو آئی سی سی ایونٹ میں شرکت کرنے پر ادا کرتی ہے۔

سری لنکا اور بنگلہ دیش کے مابین پہلا ٹیسٹ میچ آٹھ مارچ کو گال میں شروع ہو گا۔ اس سیریز میں دو ٹیسٹ میچ، تین ایک روزہ میچ اور ایک ٹی ٹوئنٹی میچ کھیلا جائے گا۔

اسی بارے میں

متعلقہ عنوانات

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔