’آفریدی تنقید کی بجائے کھیل پر توجہ دیں‘

Image caption اعجاز بٹ نے یہ پشورہ شاہد آفریدی کے نام ایک خط میں لکھ کر دیا ہے

پاکستان کرکٹ بورڈ کے سابق چیئرمین اعجاز بٹ اور کرکٹر شاہد آفریدی کے درمیان بیانات کے تبادلے کا ایک نیا سلسلہ شروع ہو گیا ہے جس کا آغاز اعجاز بٹ کی جانب سے ڈیوڈ واٹ مور پر تنقید سے شروع ہوا۔

اعجاز بٹ نے شاہد آفریدی کے الزامات کا ترکی بہ ترکی جواب دیتے ہوئے انہیں مشورہ دیا ہے کہ وہ سابق انتظامیہ پر تنقید کرنے کی بجائے قومی ٹیم میں اپنی جگہ برقرار رکھنے کے لئے اپنی بلے بازی اور گیند بازی پر توجہ دیں۔

گزشتہ ہفتے، شاہد آفریدی نے کہا تھا کہ اعجاز بٹ کے دور میں پاکستان کو میچ فکسنگ اسکینڈل کا سامنا کرنا پڑا جبکہ ان کی کپتانی میں ٹیم نے 2011 کے ورلڈ کپ کے سیمی فائنل میں جگہ بنائی لیکن اس کارکردگی کے باوجود انہیں ون ڈے کی کپتانی سے ہٹا دیا گیا تھا۔

اعجاز بٹ نے شاہد آفریدی کے نام ایک خط میں لکھا ہے کہ وہ شدت سے محسوس کرتے ہیں کہ کھلاڑیوں کو تبصرے نہیں کرنے چاہیں مگر ریٹائرمنٹ کے بعد وہ کرکٹ کے دوسرے خیر خواہوں کے بارے میں اپنی رائے دے سکتے ہیں۔

لفظوں کی جنگ اعجاز بٹ کے اس بیان سے شروع ہوئی تھی جب انہوں نے کہا کہ کوچ واٹ مور کو انکے عہدے سے ہٹا دینا چاہئے۔ کیونکہ انکی ٹی ٹونٹی کپتان محمد حفیظ سے قرابت ہے جس کی وجہ سے ون ڈے کپتان مصباح الحق دباؤ میں ہیں۔