’ کبھی سپاٹ فکسنگ میں ملوث نہیں رہا‘

Image caption ایس شری سنت ، اجیت چنڈيلا اور انكيت چوہان کو سپاٹ فکسنگ کے الزام میں پولیس نے جمعرات کوگرفتار کیا تھا

انڈین پریمیئر لیگ میں سپاٹ فکسنگ کے الزام میں گرفتار کیے گئے بھارت کے فاسٹ بولر سری سانت کا کہنا ہے کہ وہ بے گناہ ہیں۔

اس معاملے میں ملوث ہونے کے الزام کے بعد یہ سری سانت کا پہلا بیان ہے۔

انہوں نے اپنے وکیل کی کے ذریعے جاری ایک بیان میں کہا کہ’میں کبھی بھی سپاٹ فکسنگ میں ملوث نہیں رہا اور میں نے ہمیشہ کرکٹ کھیل کے جذبے کے ساتھ کھیلی ہے۔‘

سری سانت نے منگل کی رات کو جاری ہونے والے بیان میں کہا کہ’ میں بے گناہ ہوں اور میں نے کچھ غلط نہیں کیا ہے‘۔ ان کا کہنا ہے کہ انہیں’ عدالتی کاروائی پر پورا اعتماد ہے اور انہیں یقین ہے کہ وقت کے ساتھ میری بےگناہی ثابت ہو جائے گی اور میری عزت و احترام بحال ہو گا ‘

خیال رہے کہ ایس شری سنت ، اجیت چنڈيلا اور انكيت چوہان کو آئی پی ایل کے چھٹے ٹورنامنٹ میں سپاٹ فکسنگ کے الزام میں پولیس نے جمعرات کو 11 مبینہ سٹّے بازوں کے ساتھ گرفتار کیا تھا۔

گزشتہ روز عدالت نے تینوں کھلاڑیوں کے ریمانڈ میں مزید پانچ دن کی توسیع کی تھی۔

راجستھان رائلز کی ٹیم اور بھارتی کرکٹ بورڈ ان تینوں کھلاڑیوں کے معاہدے پہلے ہی منسوخ کر چکے ہیں۔آئی پی ایل کی ٹیم راجستھان رائلز نے پیر کو ایک بیان میں کہا تھا، ’انتظامیہ کی طرف سے ہمیں جو معلومات مہیا کی گئی ہیں اس کی بنیاد پر تفتیش پوری ہونے تک تینوں کھلاڑیوں کے معاہدوں کو منسوخ کر دیا گیا ہے۔‘

راجستھان رائلز کا کہنا ہے کہ ان تینوں کھلاڑیوں کے خلاف دلی پولس کے پاس بھی اس معاملے کی شکایت درج کرائی گئی ہے۔

ٹیم کے مطابق بی سی سی آئی کے ساتھ بات چیت کے بعد ٹیم کے آس پاس سکیورٹی کا دائرہ بڑھا دیا گیا ہے اور وہ دلی، ممبئی اور جے پور میں پولیس حکام کے رابطے میں ہیں۔دلی پولیس کا کہنا ہے کہ گذشتہ بدھ کو ممبئی میں ہوئے راجستھان رائلز اور ممبئی انڈینز، پانچ مئی کو جے پور میں ہونے والے راجستھان رائلز اور پونے واریئررز، اور نو مئی کو موہالی میں ہوئے راجستھان رائلز اور کنگز الیون پنجاب کی ٹیموں کے درمیان میچوں میں سپاٹ فکسنگ کی گئي تھی۔

پولیس کے مطابق سٹّے بازوں اور کھلاڑیوں کے درمیان اس پر اتفاق کیا جاتا تھا کہ ہر اوور میں کتنے رنز دینے ہیں۔ کھلاڑیوں یعنی گیند بازوں کو اشارہ کرنا ہوتا تھا کہ وہ رنز دینے کے لیے تیار ہیں۔ یہ اشارے تھے پینٹ کی جیب میں تولیہ ڈالنا، ٹی شرٹ کو بار بار چھونا، آسمان کی طرف دیکھنا، وغیرہ۔

اسی دوران ممبئی پولیس نے بھی شری سنت کے ہوٹل پر چھاپہ مار کر ان کے لیپ ٹاپ، آئی پیڈ سمیت دوسرے سامان کو قبضے میں لیا تھا۔

دہلی پولیس کے مطابق وہ اپریل سے ہی کھلاڑیوں کے موبائل فون کو مانیٹر کر رہی تھی اور اس معاملے کا تانا بانا انڈر ورلڈ سے جڑا ہوا ہے۔

اسی بارے میں