غلطی ہوئی، معافی کا طلبگار ہوں: اشرفل

بنگلہ دیش کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان محمد اشرفل نے کہا ہے کہ وہ اپنی غلطیوں پر شرمندہ ہیں اور معافی کے طلبگار ہیں۔

ادھر بنگلہ دیشی کرکٹ بورڈ نے محمد اشرفل پر ملک کی طرف سے کھیلنے پر پابندی عائد کر دی ہے۔

آئی سی سی بنگلہ دیش پریمئیر لیگ کے کئی مقابلوں میں فکسنگ کے الزامات کی تحقیق کر رہا ہے۔

محمد اشرفل نے کہا کہ’اپنی غلطیوں پر شرمندہ ہوں اور معافی کا طلبگار ہوں۔‘

انہوں نے کہا کہ وہ آئی سی سی کے ساتھ مکمل تعاون کر رہے ہیں اور سب کچھ سچ سچ بتا دیا ہے۔

اٹھائیس سالہ محمد اشرفل نے سترہ برس کی عمر میں ملک کی نمائندگی کرتے ہوئے سینچری سکور کی تھی۔

محمد اشرفل نے دو ہزار سات سے نو تک قومی ٹیم کے کپتان رہے۔ ابھی تک یہ واضح نہیں ہے کہ محمد اشرفل کی غلطی کیا ہے جس کے لیے وہ معافی کے طلبگار ہیں۔

انڈین پریمیئر لیگ میں فکسنگ کے الزامات کے بعد اب بنگلہ دیشی پریمیئر لیگ بھی فکسنگ کے الزامات کی زد میں ہے۔

بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ نے آئی سی سی کے اینٹی کرپشن اور سکیورٹی یونٹ سے درخواست کی تھی کہ وہ بنگلہ دیش کے پریمیئر لیگ کے دوسرے سیزن کی نگرانی کرے۔ بنگلہ دیش پریمیئر لیگ فروری اور مارچ میں منعقد ہوئی تھی۔

آئی سی سی کا انسداد بدعنوانی یونٹ کچھ مشکوک میچوں اور کچھ افراد کی مشکوک افراد کے بارے میں تحقیقات کر رہا ہے۔

بنگلہ دیش کرکٹ بورڈ کے صدر ناظم الحسن کو امید ہے کہ آئی سی سی کی رپورٹ ایک ہفتے میں سامنے آ جائے گی۔

ناظم الحسن نے کہا کہ کرکٹ بورڈ شہادت کے بغیر کسی کھلاڑی کے خلاف کارروائی نہیں کر سکتا لیکن چونکہ محمد اشرفل نے خود فکسنگ کو تسلیم کر لیا ہے اس لیے بورڈ سمجھتا ہے کہ انہیں ملک کی نمائندگی نہیں کرنی چاہیے۔