کیچ کی غلط اپیل پر دنیش کے خلاف کارروائی

Image caption رام دین پر یہ الزام پاکستان کے کپتان مصباح الحق کے خلاف کیچ کی غلط اپیل کرنے پر لگایا گیا

کرکٹ کے عالمی ادارے انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کا کہنا ہے کہ ویسٹ انڈیز کے کھلاڑی دنیش رام دین پر لندن میں جمعہ کو پاکستان کے خلاف میچ کے دوران ضابطۂ اخلاق کی خلاف ورزی کی فردِ جرم عائد کی گئی ہے۔

آئی سی سی کی جانب سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق دنیش رام دین چیمپیئنز ٹرافی کے میچ کے دوران آئی سی سی کے ضابطۂ اخلاق کی لیول 2 کی خلاف ورزی کے مرتکب ہوئے ہیں۔

رام دین کے خلاف یہ شکایت میچ کے آن اور آف فیلڈ امپائروں نے درج کروائی تھی۔

وکٹ کیپر رام دین پر یہ الزام پاکستان کے کپتان مصباح الحق کے خلاف کیچ کی غلط اپیل کرنے پر لگایا گیا ہے۔ امپائر نے ابتدائی طور پر مصباح کو اس اپیل کے نتیجے میں آؤٹ قرار دیا لیکن دوبارہ جائزہ لینے پر پتا چلا کہ رام دین گیند پکڑنے میں ہی ناکام رہے تھے۔

جب مصباح کو آؤٹ قرار دیا گیا تو انہوں نے کوئی رن نہیں بنایا تھا اور بعد میں وہ 96 رنز بنا کر ناٹ آؤٹ رہے۔

آئی سی سی کا کہنا ہے کہ رام دین کا رویہ کھیل کی روح کے منافی تھا تاہم دنیش رام دین نے اس الزام سے انکار کیا ہے اور اب پیر کو لندن میں اس معاملے کی سماعت ہوگی۔

لیول 2 کی خلاف ورزی پر کھلاڑی کو پچاس سے سو فیصد میچ فیس بطور جرمانہ ادائیگی کے علاوہ دو میچوں کی پابندی کا سامنا بھی کرنا پڑ سکتا ہے۔

مصباح الحق نے بھی میچ کے بعد دنیش رام دین کی اس حرکت پر ناپسندیدگی کا اظہار کیا تھا۔ ان کا کہنا تھا کہ ’اسے (رام دین کو) امپائر کو اصلیت بتا دینی چاہیے تھی۔ میں نہیں جانتا اس وقت ان کے ذہن میں کیا تھا۔ اگر میرا وکٹ کیپر ایسا کرتا تو میں یہ حرکت بالکل پسند نہ کرتا‘۔

انہوں نے کہا تھا کہ ’اگر آپ کو یقین نہیں کہ یہ کیچ ہے پھر تو بات اور ہے لیکن جب آپ جانتے ہیں کہ کیچ نہیں ہوا پھر آؤٹ کرنے کا دعوٰی کرنا کھیل کی روح کے خلاف ہے۔‘

اسی بارے میں