آسٹریلوی کرکٹ ٹیم کے کوچ مکی آرتھر برطرف

Image caption پینتالیس سالہ مکی آرتھر کے دور کے آخری مراحل میں آسٹریلوی ٹیم کئی مشکلات کا شکار رہی

آسٹریلوی ذرائع ابلاغ کے مطابق آسٹریلوی کرکٹ ٹیم کے کوچ مکی آرتھر کو برطرف کر دیا گیا ہے۔

یاد رہے کہ آسٹریلیا اور انگلینڈ کے درمیان ایشز ٹیسٹ سیریز میں صرف سولہ روز رہ گئے ہیں۔

جنوبی افریقہ سے تعلق رکھنے والے مکی آرتھر پر ٹیم میں عدم نظم و ضبط اور بری پرفارمنس کے حوالے سے شدید تنقید کی جا رہی تھی۔

آسٹریلوی کرکٹ بورڈ پیر کو ایک پریس کانفرنس کرےگا جس میں ٹیم کے نئے کوچنگ نظام پر بات کی جائے گی۔

مکی آرتھر آسٹریلیا کے پہلے غیر ملکی کوچ تھے۔ انھوں نے دو ہزار گیارہ میں ٹم نیلسن کے بعد یہ ذمہ داری سنبھالی تھی۔

انگلینڈ کے خلاف آسٹریلیا کا پہلا ٹیسٹ میچ دس جولائی کو شروع ہوگا۔

مکی آرتھر کی زیرِ نگرانی آسٹریلیا نے انیس ٹیسٹ میچوں میں سے دس میں کامیابی اور چھ میں شکست کا سامنا کیا۔

پینتالیس سالہ مکی آرتھر کے دور کے آخری مراحل میں آسٹریلوی ٹیم کئی مشکلات کا شکار رہی۔

مارچ دو ہزار تیرہ میں چار کھلاڑیوں، شین واٹسن، میچل جانسن، جیمز پیٹنسن اور عثمان خواجہ کو بھارت کے خلاف سیریز کے تیسرے ٹیسٹ میں اس لیے نہیں کھلایا گیا کہ انھوں نے ٹیم کے لائحہ عمل کے بارے میں پریزینٹیشن نہیں جمع کروائی تھی۔

چوتھے ٹیسٹ میں شین واٹسن نے واپس آ کر زخمی مائیکل کلارک کی جگہ کپتانی کی تاہم آسٹریلیا وہ سیریز چار صفر سے ہار گیا۔

مئی میں بیٹسمین ڈیوڈ وارنر کو ٹوئٹر پر صحافیوں سے غیر مذہب انداز میں مخاطب ہونے کی وجہ سے جرمانہ کیا گیا۔ چیمپیئنز ٹرافی کے دوران وارنر پر پھر برطانوی کھلاڑی جؤ روٹ سے لڑائی کی وجہ سے دس جولائی تک کی پابندی لگائی گئی۔

حال ہی میں کھیلی گئی چیمپیئنز ٹرافی میں آسٹریلیا اپنے گروپ میں آخری نمبر پر آیا۔

اس سے پہلے مکی آرتھر دو ہزار پانچ سے دو ہزار دس تک جنوبی افریقہ کی ٹیم کے کوچ رہ چکے ہیں۔ اس دوران جنوبی افریقہ نے تینتالیس سال میں پہلی بار انگلینڈ کو اور آسٹریلیا کو پہلی بار ٹیسٹ سیریز میں شکست دی۔

اسی بارے میں