آفریدی، عمر اکمل اور احمد شہزاد کی واپسی

Image caption آفریدی جنوبی افریقہ کے دورے میں کھیلے گئے پانچوں ون ڈے میں ایک بھی وکٹ حاصل نہیں کر سکے تھے

ویسٹ انڈیز کے دورے کے لیے سولہ رکنی پاکستانی ون ڈے ٹیم کا اعلان کر دیا گیا ہے۔

عمران فرحت، شعیب ملک اور کامران اکمل کو ان کی مسلسل مایوس کن کارکردگی کے سبب بالآخر ڈراپ کر دیا گیا ہے۔

شاہد آفریدی عمراکمل اور احمد شہزاد کی ٹیم میں واپسی ہوئی ہے۔

عمراکمل وکٹ کیپنگ کی اضافی ذمہ داری بھی نبھائیں گے البتہ سکواڈ میں ایک اور وکٹ کیپر محمد رضوان کو بھی رکھا گیا ہے۔

شاہد آفریدی، عمراکمل اور احمد شہزاد چیمپئنز ٹرافی کی ٹیم میں شامل نہیں کیے گئے تھے۔

بی بی سی کے نامہ نگار عبدالرشید شکور کے مطابق یہ تینوں کھلاڑی چیمپئنز ٹرافی کی ٹیم میں شامل نہ کیے جانے کے بعد سے ٹیم میں واپس آنے تک کرکٹ نہیں کھیلے ہیں۔

اقبال قاسم کی سربراہی میں قائم سلیکشن کمیٹی نے چند روز قبل اپنے طور پر کھلاڑیوں کا انتخاب کر لیا تھا تاہم پاکستان کرکٹ بورڈ کے عبوری چیئرمین نجم سیٹھی اور کپتان مصباح الحق کی انگلینڈ سے وطن واپسی پر سلیکشن پر دوبارہ غور وخوص کیے جانے کے بعد ٹیم کو حتمی شکل دی گئی۔

معلوم ہوا ہے کہ کپتان اور کوچ ڈیو واٹمور نے ویسٹ انڈیز کے دورے کے لیے اپنے طور پر جن ممکنہ کھلاڑیوں کی فہرست مرتب کی تھی اس میں شاہد آفریدی اور عمراکمل شامل نہیں تھے۔

کوچ واٹمور نے گزشتہ دنوں سلیکٹرز کے ساتھ نجم سیٹھی سے ہونے والی ملاقات میں بھی شاہد آفریدی کے نام پر تحفظات ظاہر کیے تھے۔

شاہد آفریدی کو ٹیم میں شامل کیے جانے پر چیف سلیکٹر اقبال قاسم کا موقف یہ ہے کہ ویسٹ انڈین بیٹسمین لیگ سپنر کو اعتماد سے نہیں کھیلتے لہذٰا ان کا تجربہ ٹیم کے کام آ سکتا ہے اور موجودہ ٹیم میں نچلے نمبر پر جارحانہ انداز کے بیٹسمین کی بھی ضرورت ہے۔

شاہد آفریدی جنوبی افریقہ کے دورے میں کھیلے گئے پانچوں ون ڈے میں ایک بھی وکٹ حاصل نہیں کر سکے تھے اور بیٹنگ میں سوائے اٹھاسی رنز کی ایک اننگز کے وہ دیگر میچوں میں ناکام رہے تھے تاہم ان کا اصرار ہے کہ وہ اب بھی کئی دیگر کھلاڑیوں سے بہتر ہیں۔

عمراکمل کی ون ڈے ٹیم میں واپسی اس لیے حیران کن ہے کہ وہ بھارت کے دورے میں دو ون ڈے اور ایک ٹی ٹوئنٹی کھیلے جس میں وہ بری طرح ناکام رہے جس کے بعد جنوبی افریقہ کےخلاف ٹی ٹوئنٹی میں بھی وہ قابل ذکر کارکردگی نہ دکھا سکے۔

احمد شہزاد دو سال پہلے آخری بار ون ڈے کھیلے تھے تاہم جنوبی افریقہ کے دورے میں سنچورین کے ٹی ٹوئنٹی میں انہوں نے چھیالس رنز سکور کئے تھے۔

محمد حفیظ اس لحاظ سے خوش قسمت رہے کہ جنوبی افریقہ کے خلاف پانچ ون ڈے میچوں میں صرف ایک نصف سنچری اور چیمپئنز ٹرافی کے تین میچز میں چار سات اور ستائیس رنز کی مایوس کن کارکردگی کے باوجود وہ ون ڈے سکواڈ میں موجود ہیں۔

محمد حفیظ نے اس سال ون ڈے میچز میں صرف آئرلینڈ کے خلاف سنچری بنائی ہے جبکہ صرف دو نصف سنچریاں انہوں نے بھارت اور جنوبی افریقہ کے خلاف سکور کی ہیں۔

ون ڈے کے برعکس وہ ٹی ٹوئنٹی میں زبردست فارم میں رہے ہیں اور انہوں نے بھارت اور جنوبی افریقہ کے خلاف مسلسل تین نصف سنچریاں سکور کی ہیں۔

پاکستان کی ون ڈے ٹیم ان کھلاڑیوں پر مشتمل ہے۔ مصباح الحق ( کپتان ) ناصر جمشید، احمد شہزاد، محمد حفیظ، اسد شفیق، عمراکمل، شاہد آفریدی، حارث سہیل، عمرامین، محمد عرفان، وہاب ریاض، جنید خان، سعید اجمل، اسد علی، محمد رضوان اور عبدالرحمن۔

ٹی ٹوئنٹی میں یہ کھلاڑی شامل ہیں۔ محمد حفیظ ( کپتان)، ناصرجمشید، احمد شہزاد، حارث سہیل، عمراکمل، حماد اعظم، شاہد آفریدی، سعید اجمل، سہیل تنویر، وہاب ریاض، محمد عرفان، اسد علی، عمرامین، جنید خان اور ذوالفقار بابر۔

پاکستانی ٹیم ویسٹ انڈیز میں پانچ ون ڈے اور دو ٹی ٹوئنٹی انٹرنیشنل کھیلے گی۔

پہلا ون ڈے چودہ جولائی کو کھیلا جائے گا۔

اسی بارے میں