’کیچ چھپانے کے لیے بیٹ پر ٹیپ نہیں لگائی‘

Image caption اگر بال میرے بیٹ سے ایج ہوتی ہے تو میں چلا جاؤں گا: کیون

انگلینڈ کے بلے باز کیون پیٹرسن نے آسٹریلیا میں ذرائع ابلاغ پر آنے والی اِن خبروں کی سختی سے تردید کی ہے کہ ’ایجز‘ یا بیٹ کے کنارے سے نکلنے والے کیچوں کو چھپانے کے لیےانھوں نے شاید اپنے بیٹ کے اوپر سیلیکون کی ایک خصوصی قسم کی ٹیپ لگائی ہو۔

خبروں میں عندیہ دیا گیا کہ اس معاملے میں آسٹریلیا اور انگلینڈ دونوں ٹیموں کے کھلاڑیوں کی تحقیقات ہو سکتی ہیں لیکن نام صرف کیون پیٹرسن کا لیا گیا ہے۔

تیتیس سالے کیون پیٹرسن نے ٹوئٹر پر کہا کہ ’اگر بال میرے بیٹ سے ایج ہوتی ہے تو میں کریز سے چلا جاؤں گا۔‘

انھوں نے کہا کہ ’یہ کہنا کہ میں نے ہاٹ سپاٹ نظام کو دھوکہ دینے کے لیے اپنے بیٹ کو سیلیکون سے کور کیا ہے، خوفناک جھوٹ ہے جس سے مجھے سخت غصہ آیا۔‘

کیون پیٹرسن کا مزید کہنا تھا کہ ’میں کتنا بے وقوف ہوں گا اگر میں بیٹ سے لگنے والے بال یا نک کو چھپانے کی کوشش کروں گا۔ بلے سے بال کا ٹکرانا مجھے ایل بی ڈبلیو سے بچا سکتی ہے، جس طرح میں پہلی اننگز میں ایل بی ڈبلیو سے بچا کیونکہ ہاٹ سپاٹ نظام سے پتہ چلا کہ بال میرے بلے کو چھو کر نکلی۔‘

کیچوں کو چھپانے کے لیے بیٹ پر سیلیکون ٹیپ لگانے کی خبریں آسٹریلیا کے چینل نیوز نائن نے چلائیں۔

چینل نے صرف انگلینڈ کرکٹ ٹیم کی پر الزام نہیں لگایا بلکہ نیوز نائن کا خیال ہے کہ آسٹریلیا کے بلے باز بھی کھیچوں کو چھپانے کے لیے ان’حربوں‘ کا استعمال کرتے ہونگے۔

انگلینڈ اور ویلز کرکٹ بورڈ نے نیوز نائن سے ان خبروں پر وضاحت طلب کی ہے اور چاہتی ہے کہ وہ معافی مانگے۔

اسی بارے میں