’ پاکستان بھارت کے پیچھے بھاگنا بند کرے‘

شعیب اختر
Image caption شعیب اختر نے پی سی بی سے عزت نفس کا مظاہرہ کرنے کی اپیل کی ہے

پاکستان کے سابق فاسٹ بالر شعیب اختر نے کہا ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کو بھارتی بورڈ کا پیچھے چھوڑ کر عالمی معیار کی قومی ٹیم بنانے پر توجہ دینا چاہیے۔

بھارتی خبر رساں ادارے پی ٹی آئی کے مطابق شعیب اختر نے کہا ’میں اس بات پر حیران نہیں ہوں کہ بھارت نے چیمپئنز لیگ میں کھیلنے کے لیے فیصلہ آباد وولف کے کھلاڑیوں کو ویزا نہیں دیا۔ اصل میں جب تک حکومت کی سطح پر ہمارے دوستانہ تعلقات نہیں بنتے تب تک ہم بھارتی کرکٹ بورڈ سے تعاون کی امید کیسے کر سکتے ہیں‘؟۔

شعیب اختر کے مطابق ’میں نے ہمیشہ کہا ہے کہ ہمیں بھارت کے پیچھے دوڑنے کی ضرورت نہیں ہے اور ہمیں مختلف مسائل پر بھیک مانگنا بند کر دینا چاہیے، چاہے وہ دو طرفہ کرکٹ تعلقات کی بحالی کا معاملہ ہو، پاکستانی کھلاڑیوں کو آئی پی ایل میں کھیلنے کی اجازت دینے کا معاملہ ہو یا پھر چیمپئن لیگ میں ٹیم بھیجنے کا معاملہ ہو‘۔

سابق فاسٹ بالر نے کہا کہ جب پاکستان کا معاملہ آتا ہے تو عام طور پر بی سی سی آئی حکومت کی پالیسیوں پر عمل کرتا ہے۔

شعیب نے ایک ٹی وی چینل سے بات کرتے ہوئے ’ہمیں ان سے فیصل آباد کی ٹیم کے لیے ویزا جاری کرنے کی امید کبھی نہیں کرنا چاہیے۔ جب انھوں نے ہمیں پہلی بار مدعو کیا تھا اسی وقت ہمیں سخت رخ اختیار کرتے ہوئے شکریہ کہہ دینا چاہیے تھا۔ ہم بھارت کے تئیں ایک بورڈ یا ملک کے طور پر کب اپنے رخ میں کچھ عزت نفس اور وقار کا مظاہرہ کریں گے‘؟۔

شعیب نے کہا کہ اب وقت آ گيا ہے جب پی سی بی کو قومی ٹیم کو مضبوط بنانے کے لیے کوششیں تیز کر دینی چاہیے۔

انہوں نے کہا ( ہمیں کتنا نقصان ہوگا ) ’چند سو یا ہزار ڈالر۔ لیکن اس وقت ہمیں بھارت کے پیچھے بھاگنا بند کر دینا چاہیے۔ ہمیں اپنے بورڈ کو سنوارنے اور اپنے گھریلو کرکٹ کے بنیادی ڈھانچے کو مضبوط بنانے کی ضرورت ہے‘۔

شعیب اختر نے کہا ’ہمیں اپنے کرکٹ کے ڈھانچے کی تعمیر پر توجہ دینے اور عالمی سطح کی ٹیم بنانے کی ضرورت ہے۔ جب ہماری ٹیم عالمی معیار کی ہوگی تو ہر کوئی نہ صرف ہمارے خلاف کھیلنا چاہے گا بلکہ ہماری شرائط پر کھیلے گا‘۔

اسی بارے میں