’مجھے رقص کرنا اچھا لگتا ہے‘

Image caption اپنی فٹنس اور فارم کا کھلاڑی کو خود پتہ ہوتا ہے: ویرات کوہلی

بھارت کے معروف بلے باز ویرات کوہلی ان دنوں اپنے ہیئر سٹائل، بیباک رائے اور اشتہارات کی وجہ سے بحث میں ہیں۔

گزشتہ دنوں وہ مشہور کمپنیوں کی تشہیر کے سلسلے میں نئی دہلی آئے تھے۔ اسی دوران انھوں نے صحافیوں سے لے کر پروگرام کے منتظمین، نوجوانوں اور بچوں تک کے سوالات کے جوابات دیے۔

ویرات کوہلی نے ایسے سوالات کے جوابات بھی دیے جن پر بولنے سے آج کل بڑے کھلاڑی بھی ٹال مٹول کرتے ہیں۔

تال کٹورا سٹیڈیم میں جب ایک خاتون صحافی نے ان سے پوچھا کہ آج کل ٹی وی اور فلم ستاروں سے زیادہ آپ کے اشتہارات آتے ہیں تو آپ کرکٹ اور اشتہارت دونوں کو کیسے مینج کر پاتے ہیں؟

ویرات کوہلی کا کہنا تھا ’دونوں کو مینج کرنا کافی مشکل ہوتا ہے کیونکہ میرا بھی دل کرتا ہے کہ دوستوں کے ساتھ گھوموں اور خاندان کو وقت دوں‘۔

انھوں نے کہا کہ ’اب میدان میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرنے کا ثواب اگر اشتہار کے طور پر ملتا ہے تو ان کو مکمل کرنے کے لیے وقت دینا ہی پڑے گا‘۔

ایک سوال پر کہ انوشکا شرما کے ساتھ رقص کرنا کیسا لگا تو ویرات کوہلی نے فوراً کہا ’نارمل لگا، ڈانس کرنا مجھے اچھا لگتا ہے‘۔

بالوں کی نئے انداز کے بارے میں پوچھنے پر ویرات نے کہا ’ایسا تو میں نے پہلے بھی کئی بار کیا ہے لیکن اب دو لوگوں نے مونچھیں رکھ لیں تو مونچھوں کا رجحان بن گیا، بھارتی ٹیم ایک ینگ ٹیم ہے تو ایسے ہیئر سٹائل تو آتے ہی رہیں گے‘۔

سچن تندولکر کی ٹی ٹوئنٹی کرکٹ فارم کے بارے میں ان کا کہنا تھا کہ کسی بھی کھلاڑی کی فارم کو ٹی ٹوئنٹی، ون ڈے یا ٹیسٹ میچ کی بنیاد پر پیمانے کے طور پر قائم نہیں کیا جا سکتا ہے۔

انھوں نے کہا ’اپنی فٹنس اور فارم کا کھلاڑی کو خود پتہ ہوتا ہے اور میں تو دوسروں کی باتوں پر زیادہ توجہ نہیں دیتا اور دوسرے پروفیشنل کھلاڑی بھی ایسا ہی کرتے ہوں گے‘۔

اسی بارے میں