راجر فیڈرر نے اپنے کوچ کو برخاست کر دیا

Image caption بتیس سالہ فیڈرر اب عالمی درجہ بندی میں ساتویں نمبر پر آ گئے ہیں

سترہ مرتبہ ٹینس کے گرینڈ سلام مقابلے جیتنے والے سوئس کھلاڑی راجر فیڈرر نے اپنے امریکی کوچ سے ناتا توڑ لیا۔

پال ایناکون تین برس سے زیادہ عرصے سے فیڈرر کی کوچنگ کے فرائض سرانجام دے رہے تھے۔

جولائی 2010 سے اب تک فیڈرر نے پال کی کوچنگ میں تیرہ ٹورنامنٹ جیتے جن میں 2012 کا ومبلڈن بھی شامل ہے۔

تاہم اب کچھ عرصے سے راجر فیڈرر اس کھیل کا مظاہرہ کرنے میں ناکام رہے ہیں جس کے لیے وہ معروف ہیں۔

بتیس سالہ فیڈرر اب عالمی درجہ بندی میں ساتویں نمبر پر آ گئے ہیں جو اکتوبر 2002 کے بعد ان کی کم ترین درجہ بندی ہے۔

راجر فیڈرر کا کہنا ہے کہ ’کئی بار بات چیت کے بعد ہمیں محسوس ہوا کہ راہیں جدا کرنے کے لیے یہ بہترین وقت ہے۔‘ انہوں نے یہ بھی کہا کہ ’پال اب بھی میرے عزیز دوست ہیں۔‘

انہوں نے یہ بھی کہا کہ پال سے جب ان کا تعلق قائم ہوا تھا اور ان کا مقصد ایک اور گرینڈ سلام جیتنا اور دوبارہ عالمی نمبر ایک کھلاڑی بننا تھا اور وہ یہ دونوں مقاصد حاصل کرنے میں کامیاب رہے۔

فیڈرر جولائی 2012 میں ومبلڈن ٹینس ٹورنامنٹ جیتنے کے بعد تین ماہ تک عالمی درجہ بندی میں سرفہرست رہے تھے۔

اسی بارے میں