بال ٹیمپرنگ کی تاریخ: 1976 سے 2013 تک

Image caption 2010 میں پاکستانی کرکٹر شاہد آفریدی نے آسٹریلیا کے خلاف ایک روزہ میچ میں گیند کی سلائی دانتوں سے کھینچی

دبئی میں دوسرے کرکٹ ٹیسٹ میچ کے تیسرے دن چائے کے وقفے کے بعد امپائروں نے جنوبی افریقہ کی جانب سے ’بال ٹیمپرنگ‘ کرنے پر گیند تبدیل کی اور پاکستان کو پانچ رنز دیے۔

یہ پنلٹی اس وقت لگی جب جنوبی افریقہ کے کھلاڑی ڈوپلیسی نے اپنی جیب کی زپ پر گیند کو رگڑا۔

کرکٹ قوانین میں قانون 42.3 کے مطابق گیند کو گراؤنڈ پر رگڑنا، گیند کی سلائی یا سطح کو تبدیل کرنا یا پھر کسی بھی چیز کے استعمال سے گیند کی حالت تبدیل کرنا ممنوع ہے جس سے ناجائز فائدہ اٹھایا جا سکے۔

کرکٹ میں بال ٹیمپرنگ کے تاریخ خاصی پرانی ہے۔ 1976 اور 77 میں جان لیور کے گیند پر ویزلین کریم لگانے کا تنازع شروع ہوا۔

1990 کی دہائی میں برطانیہ اور نیوزی لینڈ نے کئی بار پاکستانی گیند بازوں پر ٹیمپرنگ کا الزام عائد کیا۔ کہا جاتا ہے کہ اس دور میں پاکستانی بولر ہی ’ریورس سوئنگ‘ کے ماہر تھے اور یہی وجہ ہے کہ دیگر ٹیمیں ان پر الزامات عائد کرتی تھیں۔

1994 میں برطانوی کپتان مائیکل ایتھرٹن نے جنوبی افریقہ کے خلاف میچ میں اپنی جیب سے مٹی نکال کر گیند پر لگائی جس پر انہیں آئی سی سی نے سزا دی۔

2006 میں پاکستان کے دورۂ برطانیہ میں اوول ٹیسٹ میچ میں پاکستانی گیند بازوں پر بال ٹیمپرنگ کا الزام لگایا گیا جس پر کپتان انضمام الحق نے ٹیم کو گراؤنڈ سے واپس بلا لیا۔ ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ کا یہ واحد ٹیسٹ میچ ہے جس میں کسی کپتان نے میچ مکمل کرنے سے انکار کیا۔

ابتدائی طور پر اس میچ کا فاتح انگلینڈ کو قرار دیا گیا تاہم بعد میں پاکستان کرکٹ بورڈ کی درخواست پر اس فیصلے پر نظرِ ثانی کی گئی اور میچ کو برابر قرار دے دیا گیا۔ اس متنازع ٹیسٹ میچ کے دوران پاکستان کرکٹ ٹیم کے کوچ باب وولمر نے بعد میں کہا تھا کہ بال ٹیمپرنگ کے قانون کو ختم کر دیا جانا چاہیے۔

2009 میں جنوبی افریقہ کے گیند باز ایلن ڈونلڈ نے تجویز پیش کی تھی کہ کرکٹ کے قوانین بلے بازوں کی جانب جھکتے جا رہے ہیں، اس لیے آئی سی سی کو چاہیے کہ وہ گیند بازوں کو اس بات کی اجازت دیں کہ وہ گیند کو ’تیار‘ کر سکیں۔

سوئنگ گیند بازی کے ماہر پاکستانی گیند باز وسیم اکرم نے اس تجویز سے اختلاف کیا تھا اور ان کا کہنا تھا کہ بال ٹیمپرنگ کی اجازت دینے سے گیند بازوں کو کوئی فائدہ نہیں ہوگا۔

2010 میں پاکستانی کرکٹر شاہد آفریدی آسٹریلیا کے خلاف ایک روزہ میچ میں گیند کی سلائی کو دانتوں سے کھینچتے ہوئے کیمروں کی نظر میں آگئے۔ ان پر اگلے دو میچوں کے لیے پابندی اور جرمانہ کیا گیا۔

اسی بارے میں