جوناتھن ٹراٹ آسٹریلیا کا دورہ ادھورا چھوڑ آئے

Image caption جوناتھن ٹراٹ نے سنہ 2009 کی ایشز سیریز کےدوران اپنے ٹیسٹ کریئر کا آغاز کیا تھا

انگلینڈ کے بلے باز جوناتھن ٹراٹ ذہنی دباؤ کی وجہ سے آسٹریلیا میں جاری ایشنر سیریز چھوڑ کر واپس اپنے ملک روانہ ہو گئے ہیں۔

جوناتھن ٹراٹ نے آسٹریلیا کے خلاف پہلے ٹیسٹ میچ کی دونوں اننگز میں صرف 19 رنز بنائے تھے اور انھیں آسٹریلوی بالر مچل جانسن کی بالنگ کا سامنا کرنے میں مشکل پیش آ رہی تھی۔

انگلینڈ کی جانب سے کھیلنے والے 32 سالہ بلے باز نے کہا ’میں یہ نہیں سمجھتا کہ میں سو فیصد ٹھیک کرکٹ کھیل رہا ہوں۔‘

ان کا کہنا تھا کہ میں اس وقت پوری طرح اس سطح تک کارکردگی نہیں کر دے پا رہا جس طرح ماضی میں دیا کرتا تھا۔

جوناتھن ٹراٹ نے کہا: ’اب میری اولین ترجیح کرکٹ سے دور رہ کر خود کو مکمل طور پر فٹ کرنا ہو گی۔‘

دوسری جانب انگلینڈ کے کوچ اینڈی فلاور نے جوناتھن ٹراٹ کے بارے میں کہا: ’انھیں اس ماحول سے دور رہنے اور اپنے خاندان کے ساتھ وقت گزارنے کی ضرورت ہے۔‘

اینڈی فلارو کے مطابق ٹراٹ کچھ عرصے سے اپنی کارکردگی بہتر کرنے کے لیے کوشش کر رہے تھے۔

اینڈی فلاور کو امید ہے کہ سنہ 2011 میں آئی سی آسی اور انگلینڈ کرکٹ بورڈ کی جانب سے سال کے بہترین کھلاڑی کا اعزاز جتینے والے جوناتھن ٹراٹ بہت جلد بین الاقوامی کرکٹ میں واپس آئیں گے۔

ادھر آسٹریلیا کے بلے باز ڈیوڈ وارنر نے بھی جوناتھن ٹراٹ کی برزبین ٹیسٹ میں کارکردگی کو خراب اور کمزور قرار دیتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ انگریز بلے بازوں کی آنکھوں میں خوف تھا۔

انگلینڈ کے کپتان ایلسٹر کک نے کہا ہے کہ ڈیوڈ وانر کے ریمارکس کا ٹراٹ کے ایشز چھوڑ کر جانے سے کوئی تعلق نہیں ہے۔

انگلینڈ کرکٹ بورڈ نے ابھی تک جوناتھن ٹراٹ کی جگہ کسی دوسرے کھلاڑی کو بھیجنے کا اعلان نہیں کیا۔

خیال رہے کہ جوناتھن ٹراٹ نے سنہ 2009 کی ایشز سیریز کےدوران اپنے ٹیسٹ کریئر کا آغاز کیا تھا اور وہ انگلینڈ کی جانب سے اب تک ٹیسٹ اور ون ڈے میں بالترتیب 3,763 اور تین ہزار سے زائد رنز بنا چکے ہیں۔

آئی سی سی کی جانب سےجاری کی جانے والی ایک روزہ بین الاقوامی میچوں کی درجہ بندی میں جوناتھن ٹراٹ آٹھویں جب کہ ٹیسٹ کی درجہ بندی میں وہ 15 ویں نمبر پر ہیں۔

جوناتھن ٹراٹ حالیہ برسوں میں ذہنی دباؤ کی وجہ سے کرکٹ کا دورہ ادھورا چھوڑ کر جانے والے تیسرے انگلش کرکٹر ہیں۔

اس سے قبل انگلینڈ کے افتتاحی بلے باز مارکس ٹریسکوتھک سنہ 2006، 2005 میں بھارت جب کہ مائیکل یارڈے سنہ 2011 کا عالمی کپ ادھورا چھوڑ کر واپس چلے گئے تھے۔

اسی بارے میں