پورٹ الزبتھ میں سیریز جیتنے کا بہترین موقع

Image caption نوجوان کھلاڑیوں بلاول بھٹی اور انور علی نے عمدہ بولنگ کے علاوہ عمدہ بیٹنگ بھی کی

کپتان مصباح الحق کیپ ٹاؤن کی جیت کو ضائع نہیں ہونے دینا چاہتے اور بدھ کے روز پورٹ الزبتھ میں ایک نئی تاریخ رقم کرنے کے لیے بے چین ہیں۔

پاکستان نے جنوبی افریقہ کے خلاف کبھی بھی ون ڈے سیریز نہیں جیتی اور مصباح الحق کا کہنا ہے کہ اس بار سیریز جیتنے کا بہت ہی اچھا موقع ہاتھ آیا ہے تاہم اس کے لیے کھلاڑیوں کو سو فیصد کارکردگی دکھانی ہوگی خاص کر بیٹنگ کو بہتر کرنا ہوگا۔

پاکستان اور جنوبی افریقہ کے مابین سیریز کا دوسرا ون ڈے میچ بدھ کو پورٹ الزبتھ میں کھیل جائے گا۔

پاکستان نے جنوبی افریقہ کو 23 رنز سے ہرا دیا

مصباح الحق کا کہنا ہے کہ متحدہ عرب امارات میں کھیلی گئی سیریز پاکستانی ٹیم کے نقطہ نظر سے بہت ہی مایوس کن رہی لیکن جنوبی افریقہ کے اس دورے میں ٹی ٹوئنٹی اور پھر ون ڈے کی جیت نے نیا حوصلہ دیا ہے۔ نوجوان کھلاڑیوں کی عمدہ کارکردگی خوش آئند ہے۔

مصباح الحق کا کہنا ہے کہ اپنا پہلا میچ کھیلنے والے بلاول بھٹی اور انورعلی نے بھرپور اعتماد کا مظاہرہ کیا اور اپنی ذمہ داری محسوس کی۔ ٹیم کو جب ضرورت تھی انہوں نے بیٹنگ بھی اچھی کی اور پھر بولنگ میں بھی وہ نمایاں رہے۔ یہ کارکردگی اس لیے بھی اہم ہے کیونکہ ماضی میں نمبر آٹھ یا نو کی طرف سے بیٹنگ میں اس طرح کی کارکردگی سامنے نہیں آئی تھیں ۔

انور علی نے تینتالیس رنز ناٹ آؤٹ سکور کرنے کے علاوہ ژاک کیلس اور ڈیوڈ ملر کی وکٹیں حاصل کی تھیں ۔

بلاول بھٹی نے انتالیس رنز سکور کرنے کے بعد تین وکٹیں حاصل کیں۔

پاکستانی ٹیم میں بظاہر کوئی تبدیلی متوقع نہیں حالانکہ ٹیم محمد حفیظ اور ناصرجمشید کی مایوس کن کارکردگی تلے دبی ہوئی ہے۔ احمد شہزاد بھی مسلسل دو نصف سنچریوں کے علاوہ آٹھ اننگز میں قابل ذ کر سکور نہیں کر سکے ہیں۔ عمراکمل کی غیرمستقل مزاجی بھی ٹیم مینجمنٹ کی پریشانی میں اضافہ کیے ہوئے ہے۔

کپتان مصباح الحق پر بھی بڑا سکور اب قرض ہے جو آخری چھ ون ڈے میں صرف ایک نصف سنچری سکور کرنے میں کامیاب ہوسکے ہیں۔

اسی بارے میں