سپاٹ فکسنگ: نیوزی لینڈ کےسابق کھلاڑیوں کےخلاف تحقیقات

Image caption چند پرانے میچوں میں ’فکسنگ‘کے معاملات کی تحقیقات جاری ہیں: آئی سی سی

نیوزی لینڈ میں کرکٹ کے منتظم ادارے نے تصدیق کی ہے کہ عالمی کرکٹ کونسل کا انسدادِ بدعنوانی کا یونٹ ملک کے چند سابق کرکٹرز کے خلاف سپاٹ فکسنگ کے الزامات کی تحقیقات کر رہا ہے۔

نیوزی لینڈ کرکٹ کی جانب سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق یہ تحقیقات گذشتہ کئی ماہ سے جاری ہیں۔

بیان میں کہا گیا ہے کہ ’نیوزی لینڈ کرکٹ اس امر سے آگاہ ہے کہ انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نیوزی لینڈ کے کرکٹ کھلاڑیوں کی ایک چھوٹی تعداد کے خلاف تحقیقات کر رہی ہے۔‘

منتظم ادارے کا کہنا ہے کہ ’چونکہ یہ معاملہ آئی سی سی کی تحقیقات کا ہے اس لیے بدقسمتی سے نیوزی لینڈ کرکٹ اس پر مزید تبصرہ نہیں کر سکتا۔‘

عالمی کرکٹ کونسل بھی تحقیقات کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ چند پرانے میچوں میں ’فکسنگ‘کے معاملات کی تحقیقات جاری ہیں اور چونکہ ابھی تفتیش چل رہی ہے اور کسی پر اس سلسلے میں فردِ جرم عائد نہیں کی گئی ہے اس لیے آئی سی سی یا نیوزی لینڈ کرکٹ اس پر مزید بات نہیں کریں گے۔

نیوزی لینڈ کرکٹ اور آئی سی سی کی جانب سے یہ بیانات نیوزی لینڈ ہیرالڈ نامی اخبار میں بدھ کو اس رپورٹ کی اشاعت کے بعد سامنے آیا ہے جس میں کہا گیا تھا کہ آئی سی سی سابق کھلاڑیوں کے سپاٹ اور میچ فکسنگ میں ملوث ہونے کی تفتیش کر رہی ہے۔

اخبار کے مطابق اس کام میں تین کھلاڑی ملوث رہے جن میں سے اب کوئی بھی بین الاقوامی یا پیشہ ور کرکٹ نہیں کھیل رہا۔

خیال رہے کہ نیوزی لینڈ کی حکومت نے گذشتہ ہفتے ہی حکومتی اداروں اور کھیلوں کی تنظیموں کے درمیان معلومات کے تبادلے اور تعاون کو فروغ دینے کے لیے کوششیں شروع کرنے کا آغاز کیا ہے۔

وہ آئندہ برس ملک میں میچ فکسنگ کے خلاف قانون سازی کا ارادہ بھی رکھتی ہے۔

اسی بارے میں