عثمان شنواری پاکستانی ٹی 20 سکواڈ میں شامل

Image caption عثمان شنواری اس سیزن میں چار فرسٹ کلاس میچز کھیل چکے ہیں

بائیں ہاتھ کے نوجوان فاسٹ بولر عثمان خان شنواری کو سری لنکا کے خلاف ٹی ٹوئنٹی سیریز کھیلنے والی پاکستانی ٹیم میں شامل کر لیا گیا ہے۔

وہ منگل کی شب دبئی روانہ ہو رہے ہیں اور توقع ہے کہ انہیں بدھ کے روز کھیلے جانے والے پہلے ٹی ٹوئنٹی میچ میں کھیلنے کا موقع فراہم کیا جائے گا۔

انیس سالہ عثمان شنواری اپنے پہلے ہی سیزن میں قومی ٹیم میں جگہ بنانے میں کامیاب ہوئے ہیں جس کا سبب گذشتہ ہفتے ٹی ٹوئنٹی کپ کے فائنل میں ان کی شاندار کارکردگی ہے۔

عثمان شنواری نے زرعی ترقیاتی بینک کی طرف سے کھیلتے ہوئے سوئی ناردرن گیس کی مضبوط ٹیم کے خلاف صرف نو رنز دے کر پانچ وکٹیں حاصل کی تھیں۔

ان کے ہاتھوں آؤٹ ہونے والوں میں مصباح الحق اور توفیق عمر جیسے تجربہ کار بیٹسمین بھی شامل تھے۔

اس ٹی ٹوئنٹی کپ میں عثمان سب سے زیادہ گیارہ وکٹیں حاصل کرنے والے بولر تھے۔

قومی سلیکشن کمیٹی کے رکن سابق ٹیسٹ کرکٹر سلیم جعفر نے بی بی سی اردو کے عبدالرشید شکور کو بتایا کہ صرف چودہ رکنی ٹی ٹوئنٹی سکواڈ کا اعلان اس لیے کیا گیا تھا کہ اگر کوئی کھلاڑی ٹی ٹوئنٹی کپ میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرتا ہے تو اسے ٹیم میں شامل کر لیا جائے۔

انھوں نے کہا کہ ’عثمان شنواری نے ٹی ٹوئنٹی کپ میں عمدہ بولنگ کی، خاص کر فائنل میں ان کی کارکردگی انتہائی شاندار رہی۔ وہ گیند کو سوئنگ کرنے کی غیر معمولی صلاحیت رکھتے ہیں اور چونکہ سری لنکن ٹیم میں زیادہ تر بائیں ہاتھ کے بیٹسمین ہیں لہٰذا وہ ان کے خلاف موثر بولر ثابت ہو سکتے ہیں۔‘

سلیم جعفر کا کہنا ہے کہ نئے کھلاڑیوں کو بتدریج موقع دینے کا مقصد ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کی تیاری بھی ہے جس کے لیے ایک متوازن ٹیم تشکیل دینا ہے۔

عثمان شنواری کا تعلق خیبر ایجنسی سے ہے اور انہوں نے اسی سال کے آر ایل کی طرف سے اپنے کریئر کا آغاز رمضان ٹی ٹوئنٹی کپ میں کیا اور نیشنل بینک کے خلاف پہلے میچ میں دو وکٹیں حاصل کیں تاہم اس کے بعد وہ زرعی ترقیاتی بینک کی ٹیم میں شامل ہوگئے اور واپڈا کے خلاف اپنے پہلے ہی میچ میں چار کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

عثمان شنواری اس سیزن میں چار فرسٹ کلاس میچز کھیل چکے ہیں جن میں انہوں نے بارہ وکٹیں حاصل کی ہیں۔ ان کی بہترین بولنگ ستائیس رنز کے عوض چار وکٹ ہے۔

اسی بارے میں