دبئی: دباؤ میں مصباح اور یونس کی ذمہ دارانہ بلے بازی

Image caption مصباح نے ٹیسٹ کرکٹ میں اپنے تین ہزار رنز بھی مکمل کر لیے

دبئی میں سری لنکا کے خلاف دوسرے ٹیسٹ میچ کے تیسرے روز مصباح الحق اور یونس خان کی ذمہ دارانہ بلے بازی کی بدولت پاکستان کی مشکلات کچھ کم تو ہوئی ہیں لیکن میچ پر سری لنکا کی گرفت اب بھی مضبوط ہے۔

جمعہ کو تیسرے روز کے کھیل کے اختتام پر پاکستان نے اپنی دوسری اننگز میں تین وکٹوں کے نقصان پر 132 رنز بنا لیے اور اسے سری لنکا کی پہلی اننگز کی 223 رنز کی برتری کے خاتمے کے لیے مزید 91 رنز درکار ہیں۔

تفصیلی سکور کارڈ

دبئی ٹیسٹ کا تیسرا دن: تصاویر

جب خراب روشنی کی وجہ سے کھیل روکا گیا تو کریز پر تجربہ کار بلے باز یونس خان اور مصباح الحق موجود تھے اور ان دونوں کے درمیان 113 رنز کی ناقابلِ شکست شراکت ہوئی ہے۔

اس دوران دونوں بلے بازوں نے نصف سنچری بنائی ہیں جبکہ مصباح نے ٹیسٹ کرکٹ میں اپنے تین ہزار رنز بھی مکمل کر لیے ہیں۔

پاکستان کی دوسری اننگز کا آغاز بھی اوپنر احمد شہزاد کے لیے مختلف نہیں رہا اور وہ صرف نو رنز بنا کر کھانے کے وقفے سے قبل کے آخری اوور کی پانچویں گیند پر ہیراتھ کے ہاتھوں آؤٹ ہوئے۔

Image caption پاکستان کی دوسری اننگز کا آغاز بھی احمد شہزاد کے لیے مختلف نہیں رہا

لنچ کے فوری بعد پردیپ نے محمد حفیظ اور وکٹوں کے پیچھے کیچ کروا دیا جبکہ پہلی اننگز کے ٹاپ سکورر خرم منظور بھی پردیپ کا ہی دوسرا شکار بنے۔

اس سے قبل سری لنکن بلے باز تیسرے روز ٹیم کے مجموعی سکور میں صرف 70 رنز کا ہی اضافہ کر سکے اور پوری ٹیم 388 رنز پر آؤٹ ہوگئی۔

سری لنکن اننگز کی خاص بات مہیلا جے وردھنے کی عمدہ سنچری تھی، وہ 129 رنز بنا کر آؤٹ ہوئے۔ ان کے علاوہ کوشل سلوا صرف پانچ رنز کے فرق سے اپنی سنچری مکمل نہ کر سکے، انھوں نے 10 چوکوں کی مدد سے 95 رنز بنائے۔

پاکستان کی جانب سے جنید خان نے تین اور سعید اجمل اور راحت علی نے دو، دو وکٹیں حاصل کیں جبکہ بلاول بھٹی اور محمد حفیظ نے ایک ایک وکٹ حاصل کر سکے۔’

اس میچ میں سری لنکا نے ٹاس جیت کر پاکستان کو پہلے بیٹنگ کی دعوت دی تھی اور پاکستان نے اپنی پہلی اننگز میں 165 رنز بنائے تھے۔

ابوظہبی میں پاکستان اور سری لنکا کے مابین کھیلا جانے والا پہلا ٹیسٹ میچ بغیر کسی نتیجے کے ختم ہو گیا تھا۔

اسی بارے میں