’پہلے کوچ کی تقرری پھر ٹیم کی سلیکشن‘

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption عامر سہیل نے کچھ کھلاڑیوں کے فٹنس ٹیسٹ لینے کا بھی فیصلہ کیا ہے

پاکستان کی قومی سلیکشن کمیٹی کے سربراہ اور سابق کرکٹر عامر سہیل کا کہنا ہے کہ ایشیا کپ کے لیے ٹیم کے انتخاب میں کوچ کی مشاورت اہم ہے اس لیے ٹیم کا اعلان کوچ کے تقرر کے بعد کیا جائے گا۔

عامر سہیل دو روز قبل ہی سلیکشن کمیٹی کے چیئرمین مقرر کیے گئے ہیں البتہ دیگر سلیکٹرز سلیم جعفر، فرخ زمان اور اظہر خان کو برقرار رکھا گیا ہے۔

اس سلیکشن کمیٹی کی پہلی ذمہ داری 25 فروری سے بنگلہ دیش میں شروع ہونے والے ایشیا کپ کے لیے پاکستانی کرکٹ ٹیم کا انتخاب ہے۔

عامرسہیل نے پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین ذکا اشرف سے درخواست کی ہے کہ نئے کوچ کا انتخاب کرنے والی کمیٹی جلد سے جلد اپنا کام مکمل کرے کیونکہ وہ چاہتے ہیں کہ ٹیم کے انتخاب میں کوچ کی مشاورت بھی شامل کی جائے جو بہت ضروری ہے۔

عامرسہیل کا یہ بھی کہنا ہے کہ کچھ کھلاڑیوں کی فٹنس کے مسائل ہیں لہذا آئندہ ایک دو روز میں ان کھلاڑیوں کے فٹنس ٹیسٹ لیے جائیں گے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے نئے کوچ کی درخواستوں کی وصولی کی آخری تاریخ آٹھ فروری تک بڑھا دی ہے ۔

اس عہدے کے لیے مضبوط امیدوار سمجھے جانے والے سابق کپتان وقار یونس نے جمعرات کو باقاعدہ اپنی درخواست کمیٹی کو دی ہے۔

پاکستانی ٹیم کے کوچ کا عہدہ ڈیو واٹمور کی دوسالہ مدت مکمل ہونے کے بعد خالی ہوا ہے۔

نئے کوچ کا انتخاب کرنے کے لیے کرکٹ بورڈ نے ایک کمیٹی بھی تشکیل دے رکھی ہے جو تمام درخواستوں کا جائزہ لے گی۔

اس کمیٹی میں انتخاب عالم، جاوید میانداد، وسیم اکرم اور پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیف آپریٹنگ آفیسر سبحان احمد شامل ہیں۔

اسی بارے میں