انگلش بورڈ نے پیٹرسن کو نکالنے کی وجہ بتا دی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ای سی بی نے ابتدائی طور پر پیٹرسن کو ویسٹ انڈیز اور ٹی ٹوئنٹی کے عالمی کپ کے لیے منتخب نہ کرنے کی وجہ بتانے سے انکار کر دیا تھا

انگلینڈ اور ویلز کرکٹ بورڈ (ای سی بی) کا کہنا ہے کہ کیون پیٹرسن کا بین الاقوامی کریئر ختم ہو گیا ہے اس لیے کپتان ایلسٹر کک کو چاہیے کہ وہ ٹیم میں ایسا ماحول پیدا کریں جس سے دیگر کھلاڑی ایک دوسرے پر بھروسہ کر سکیں۔

خیال رہے کہ ای سی بی کی گورننگ باڈی کو پیٹرسن کا قبل از وقت معاہدہ ختم کرنے کی وجہ تنقید کا سامنا ہے۔

تاہم ای سی بی نے اتوار کو ایک بیان میں کہا ہے کہ وہ چاہتا ہے کہ ٹیسٹ اور ون ڈے کے کپتان ایلسٹر کک ٹیم میں ایسا ماحول پیدا کریں جہاں انھیں تمام کھلاڑیوں کی حمایت حاصل ہو۔

ای سی بی نے ابتدائی طور پر پیٹرسن کو ویسٹ انڈیز اور ٹی ٹوئنٹی کے عالمی کپ کے لیے منتخب نہ کرنے کی وجہ بتانے سے انکار کر دیا تھا جس کی وجہ سے ان کا کریئر ختم ہو گیا، تاہم انگلینڈ کے قومی سیلیکٹر جیمز ویٹکر نے جمعرات کو ایک بیان میں کہا کہ یہ برطانوی ٹیم کی تعمیرِ نو کا وقت ہے۔

دوسری جانب ای سی بی اور پروفیشنل کرکٹرز ایسوسی ایشن نے ایک مشترکہ بیان میں کہا: ’یہ بات ہمارے لیے بہت جھنجھلاہٹ کا باعث ہے کہ ہم انگلش کھلاڑیوں پر کی جانے والی منفی تنقید کا جواب دینے کے قابل نہیں ہیں۔‘

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ آسٹریلیا کے ہاتھوں وائٹ واش کے بعد انگلش ٹیم کو تعمیرِ نو کی ضرورت ہے۔

بیان کے مطابق: ’انگلش ٹیم کی تعمیرِ نو کے لیے ہمیں کپتان ایلسٹر کک کا بھر پور ساتھ دینا ہوگا تاکہ وہ ٹیم میں ایک ایسا ماحول کر سکیں جس سے ٹیم کے دیگر کھلاڑی ان کی حمایت کریں۔

اس سے پہلے انگلینڈ کے وکٹ کیپر میٹ پرائر نے ٹی وی کے میزبان پیئرس مورگن کے ان الزمات کو مسترد کر دیا کہ کیون پیٹرسن نے ڈائریکٹر اینڈی فلاور پر تنقید کی تھی۔ پیٹرسن کی اہلیہ نے بھی پیٹرسن اور فلاور کے درمیان کشیدگی کی تردید کی تھی۔

کیون پیٹرسن نے انگلینڈ کی جانب سے 104 ٹیسٹ میچوں میں 23 سنچریوں کی مدد سے 8181 رنز بنا رکھے ہیں۔ اس کے علاوہ انھوں نے 136 ایک روزہ میچوں میں نو سنچریوں کی مدد سے 4,440 رنز جبکہ 37 ٹی ٹوئنٹی میچوں میں 1,176 رنز بنائے ہیں۔

سنہ 2004 میں انگلینڈ کی جانب سے اپنے کریئر کا آغاز کرنے والے کیون پیٹرسن نے کہا تھا: ’اپنے ملک کے لیے کھیلنا میرے لیے فخر کی بات ہے۔ میں نے جب بھی انگلینڈ کی شرٹ پہنی، وہ لمحہ میرے لیے باعثِ فخر رہا تھا اور یہ ہمیشہ میرے ساتھ رہے گا۔‘

حال ہی میں انگلینڈ کی ٹیسٹ ٹیم کو آسٹریلیا کے خلاف ایشز سیریز میں پانچ صفر کی شکست کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ اگرچہ پیٹرسن نے انگلینڈ کے لیے اس سیریز میں سب سے زیادہ رنز بنائے، لیکن ان پر کئی مرتبہ آؤٹ ہونے کے انداز کی وجہ سے تنقید کی گئی تھی۔

اسی بارے میں