امریکی ایتھلیٹ غسل خانے کے بعد لفٹ میں بھی پھنس گیا

کوئن
Image caption کوئن پیر کے روز صحافیوں کو یہ بتانے میں مصروف رہے کہ انہوں نے دروازہ کیسے توڑا

سوچی میں ہونے والے سرمائی اولمپکس میں شریک ایک امریکی ایتھلیٹ 48 گھنٹے کے دوران پہلے غسل خانے اور پھر لفٹ میں پھنس گئے۔

امریکے سے تعلق رکھنے وال باب سلیئر جونی کوئن نے لفٹ کا دروازہ کھولنے کی کوشش کرتے ہوئے اپنی تصویر کے ساتھ سماجی رابطے کی سائٹ ٹوئٹر پر لکھا: ’کوئی یقین نہیں کرے گا لیکن میں لفٹ میں پھنس گیا ہوں۔‘

ٹیم کے ترجمان نے اس کی تصدیق کرتے ہوئے بتایا کہ وہ بالآخر باہر نکلنے میں کامیاب ہو گئے۔

کوئن ہفتے کے اختتام پر اس وقت خبروں کی زینت بنے جب وہ غسل خانے کے منجمد دروازے کو توڑ کر باہر آنے پر مجبور ہوئے۔

سوچی اولمپکس کے افتتاحی روز کوئن نے جب غسل کرنے کے بعد دروازہ کھولنے کی کوشش کی تو انہیں معلوم ہوا کہ دروازہ کسی وجہ سے کھل نہیں رہا۔

انہوں نے ٹویٹ کیا کہ ’مدد کے لیے کسی کو بلانے کے لیے میرے پاس فون نہیں تھا۔ میں نے اپنی باب سلیڈ دھکیلنے کی تربیت کا استعمال کرتے ہوئے دروازہ توڑ دیا۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption کوئن ہفتے کے اختتام پر اس وقت خبروں کی زینت بنے جب وہ غسل خانے کے منجمد دروازے کو توڑ کر باہر آنے پر مجبور ہوئے

کوئن پیر کے روز صحافیوں کو یہ بتانے میں مصروف رہے کہ انہوں نے کیسے دروازہ توڑا۔

کچھ ہی گھنٹوں بعد رات کے کھانے سے قبل وہ دو مزید ساتھیوں کے ہمراہ لفٹ میں پھنس گئے۔

ابھی تک یہ معلوم نہیں ہو سکا کہ یہ لوگ باہر کیسے نکلے۔

سوچی اولمپکس میں ایتھلیٹوں اور مقابلوں کی کوریج کرنے والے صحافیوں کے لیے رہائشی عمارتوں کے معیار کے کئی مسائل سامنے آئے ہیں۔

سوچی پہنچنے والے صحافیوں نے یہاں غیر معمولی جڑواں بیت الخلا اور نامکمل ہوٹلوں کے علاوہ پانی اور بجلی کے مسائل کے بارے میں خبریں دی ہیں۔

اسی بارے میں