فائنل کی ریہرسل میں سری لنکا کی جیت

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption کپتان اینجیلو میتھیوز سات چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے ناقابل شکست 74 رنز بناکر اپنی ٹیم کو اس ٹورنامنٹ میں مسلسل چوتھی کامیابی دلا دی

بنگلہ دیشی ٹیم نے دو سال قبل اپنے ہی میدان پر ایشیا کپ کا فائنل کھیلا تھا لیکن اس بار وہ کوئی بھی میچ نہ جیت سکی اور ٹورنامنٹ کا اختتام سری لنکا کے خلاف تین وکٹوں کی شکست پر کیا۔

سری لنکا کے لیے یہ میچ ہفتے کو پاکستان کے خلاف ہونے والے فائنل کی ریہرسل تھا جس میں اس نے فاسٹ بولر لستھ مالنگا کو آرام دیا لیکن مکمل بیٹنگ لائن کے ساتھ کھیلتے ہوئے بھی اسے اپنے صف اول کے بلے بازوں سے مایوسی ہوئی جنہوں نے 205 کے ہدف کو بھی مشکل بنا دیا۔

کپتان اینجیلو میتھیوز کی اب یہ ذمہ داری بن چکی ہے کہ مڈل آرڈر بلے بازوں کے آنکھیں بدل لینے کے بعد وہ ٹیم کو مشکل سے نکالیں۔

اس بار بھی انھوں نے یہ ذمہ داری خوب نبھائی اور سات چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے ناقابل شکست 74 رنز بناکر اپنی ٹیم کو اس ٹورنامنٹ میں مسلسل چوتھی کامیابی دلا دی۔

میتھیوز نے ڈی سلوا کے ساتھ چھٹی وکٹ کی شراکت میں 82 اور پھر تشارا پریرا کے ساتھ ساتویں وکٹ کے لیے قیمتی 36 رنز کا اضافہ کرکے بنگلہ دیشی شائقین کے چہروں سے مسکراہٹ چھین لی جو اپنی ٹیم سے پہلی جیت کی امیدیں وابستہ کیے بیٹھے تھے۔

ڈی سلوا نے 44 رنز کی عمدہ اننگز کھیلی۔

سری لنکن اننگز کی دوسری ہی گیند پر کوشل پریرا الامین حسین کی گیند پر وکٹ کیپر انعام الحق کے ہاتھوں کیچ ہوئے۔ اپنے اگلے ہی اوور میں الامین حسین کی خوشی کی انتہا نہ تھی کیونکہ ان کے ہاتھ آنے والی وکٹ کسی اور کی نہیں بلکہ کمارسنگاکارا کی تھی جو صرف دو رنز بناکر سلپ میں ناصر حسین کے ہاتھوں کیچ ہوگئے۔

مہیلا جے وردھنے کے صفر پر رن آؤٹ ہونے نے سری لنکا کی مشکلات میں اضافہ کردیا۔

تھری مانے اور ایشن پریانجن نے سیلاب کے آگے بند باندھنے کی کوشش کی لیکن سکور کے 75 تک آتے آتے یہ دونوں بھی پویلین میں جا چکے تھے۔

اس سے قبل بنگلہ دیشی بلے باز بھی سری لنکا کے بولرز کے سامنے مشکلات میں ہی گھرے رہے حالانکہ شمس الرحمن اور انعام الحق نے 74 رنز کی شراکت سے ایک بڑےسکور کی امید پیدا کردی تھی لیکن مینڈس پریانجن اور ڈی سلوا کے سپن ٹرائیکا نے صرف 45 رنز کے اضافے پر آدھی ٹیم پویلین بھیج دی۔

فاسٹ بولرز لکمل اور تشارا پریرا نے دو دو وکٹیں حاصل کر کے باقی ماندہ بلے بازوں کی بساط 84 رنز کے اضافے پر لپیٹ دی یوں بنگلہ دیشی ٹیم مقررہ 50 اوورز میں نو وکٹوں پر 204 رنز بنا سکی۔

اسی بارے میں