جوکووچ نے دبئی کا بدلہ انڈین ویلز میں لیا

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption فیڈرر اور جوکووچ کے درمیان ابھی تک 33 مقابلے ہو چکے ہیں جن میں سے فیڈرر 17 جبکہ جوکووچ 16 میں کامیاب رہے

سربیا کے ٹینس سٹار نوواک جوکووچ نے ایک سنسنی خیز مقابلے میں سوئٹزرلینڈ کے روجر فیڈرر کو ہرا کر انڈین ویلز میں بی این پی پریبا اوپن جیت لیا ہے۔

جوکووچ نے پہلا سیٹ 6-3 ہارنے کے بعد زبردست واپسی کی اور دوسرا سیٹ 3-6 سے جیت لیا پھر تیسرے اور آخری سیٹ میں 6-7 سے ٹائی بریکر میں کامیابی حاصل کی۔

تیسرے سیٹ میں وہ اپنی سروس سے قبل 4-5 کی سبقت لے چکے تھے لیکن فیڈرر نے ان کی سروس بریک کر کے میچ ٹائی بریکر میں پہنچا دیا۔

واضح رہے کہ دبئی میں جوکووچ فیڈرر سے ہار گئے تھے اس لیے اس جیت کو دبئی کے بدلے سے تعبیر کیا جا رہا ہے۔

جوکووچ نے میچ اور خطاب جیتنے کے بعد کہا ’یہ قابل فخر کامیابی ہے۔ یہ صرف ٹرافی جیتنے کی بات نہیں لیکن جس طرح سے ایک سیٹ گنوانے کے بعد میں نے میچ میں واپسی کی وہ اہم ہے اور اس سے مجھے زبردست اعتماد ملا ہے۔‘

انھوں نے مزید کہا کہ ’میں نے سیمی فائنل میں کہا تھا کہ فائنل کا فیصلہ بہت ہی کم پوائنٹس پر ہوگا اور میں اپنے اس بیان پر صادق اترا کیونکہ پہلے دونوں سیٹ میں ایک ایک بریک نے ہی سیٹ کا فیصلہ کر دیا لیکن میچ فیصلہ کن مرحلے میں زبردست اور سنسنی خیز ہو گیا۔‘

فیصلہ کن تیسرے سیٹ میں اپنی سروس گنوانے کے بعد ‌فیڈرر نے ایڑی چوٹی کا زور لگا دیا اور جوکووچ کی سروس کو توڑ کر میچ برابری پر لے آئے۔ اس کے بعد سے ٹائی بریکر شروع ہو گیا اور پھر جوکووچ نے فوراً ہی 0-3 کی سبقت حاصل کر لی۔

ایک بار فیڈرر نے میچ پوائنٹ کے لیے بھی سروس کی لیکن جوکووچ نے اسے فورا ہی ختم کر دیا ۔

سابق عالمی نمبر ایک فیڈرر نے گذشتہ سال سٹیفن ایڈبرگ کو اپنا کوچ مقرر کیا ہے۔ فیڈرر نے کہا کہ ’میں آخر میں ایک دو پوائنٹ مزید حاصل کرنا چاہتا تھا لیکن نوواک نے اسے مشکل بنا دیا تھا۔‘

بہر حال انھوں نے کہا کہ ’میں خوش ہوں اور میں فی الحال اچھی ٹینس کھیل رہا ہوں۔‘

فیڈرر کے لیے خوشی کی بات یہ ہے کہ انڈین ویلز کے فائنل میں پہنچنے سے وہ اب عالمی رینکنگ میں آٹھویں سے پانچویں نمبر پر آجائیں گے۔

واضح رہے کہ ان دونوں کے درمیان یہ 33 واں مقابلہ تھا اور فیڈرر کو 16-17 سے سبقت حاصل ہے۔

اسی بارے میں