شوماکر ’کوما سے نکل آئے‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption شوماکر چھ ماہ سے زیادہ عرصہ کوما میں رہے ہیں

سکیئنگ کے دوران شدید زخمی ہونے کے بعد مہینوں بے ہوش رہنے والے فارمولا ون کے چیمپیئن شوماکر اب ہوش میں آ گئے ہیں۔

شوماکر کے خاندان نے ایک بیان میں کہا ہے کہ 45 سالہ شوماکر کو ہسپتال سے فارغ کر دیا گیا ہے اور اب روبصحت ہونے کے لیے انھیں کسی نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا گیا ہے۔

بیان میں عالمی چیمپیئن کے گھر والوں نے نیک خواہشات بھیجنے والے لوگوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ انھیں’یقین ہے کہ ان کی نیک خواہشات سے شوماکر کو سہارا ملا۔‘

یاد رہے کہ فرانس میں گذشتہ برس 29 دسمبر کو سکیئنگ کے دوران شدید زخمی ہونے کے بعد سے شوماکرگرینوبل کے ہسپتال میں زیرِ علاج تھے اور وہ کوما میں تھے۔

سکیئنگ کے دوران پیش آنے والے اس حادثے کی تحقیقات کرنے والے ماہرین کہتے رہے ہیں کہ جب میربل کے پہاڑوں میں یہ حادثہ پیش آیا اس وقت شوماکر کی رفتار ’سکیئنگ کے اچھے کھلاڑی‘ جتنی ہی تھی۔

جرمنی سے تعلق رکھنے والے مائیکل شوماکر نے 2012 میں دوسری بار ریٹائرمنٹ لی تھی۔ انھیں فرنچ ایلپس کے پہاڑی سلسلے میں واقع ایک الپائن ریزورٹ میں سکیئنگ کے دوران اس وقت سر پر چوٹ آئی تھی جب ان کا سر ایک چٹان سے ٹکرا گیا تھا۔ اس ٹکراؤ کے نتیجے میں ان کا ہیلمٹ ٹوٹ گیا تھا جسے بعد میں حادثے کی تحقیقات کرنے والے ماہرین کے حوالے کر دیا گیا تھا تا کہ وہ ہیلمٹ پر لگے ہوئے کیمرے میں ریکارڈ شدہ مواد کی مدد سے حادثے کی وجوہات جان سکیں۔

شو ماکر کے کوما کے دوران گزرنے والی ان کی سالگرہ کے موقع پر ان کے مداحوں کے پیغامات کے جواب میں شوماکر کے خاندان کا کہنا تھا کہ وہ فراری کے مداحوں کی جانب سے ’ہمدردی کے جذبات اور پیغامات‘ سے اشک بار ہوگئے۔

اسی بارے میں