’ناقص کیپنگ اور کمزور فنشنگ‘، کوریا اور روس کا میچ برابر

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption کیون ہو لی کی شاٹ روسی کیپر آئیگور اکنفیف روکنے میں ناکام رہے

برازیل میں جاری فٹبال ورلڈ کپ میں گروپ ایچ میں جنوبی کوریا اور روس کا میچ ایک ایک گول سے برابر ہے۔

یہ میچ منگل کی شب کوئیبا کے پنتانال نامی سٹیڈیم میں کھیلا گیا۔

ورلڈ کپ کی مکمل کوریج

جنوبی کوریا اور روس دونوں نے اس میچ میں کوئی قابلِ ذکر کارکردگی نہیں دکھائی اور مخالف گول پر اکا دکا حملوں کے سوا دفاعی انداز ہی اپنائے رکھا۔

میچ کے پہلے ہاف میں جنوبی کوریا کے مڈفیلڈرز نے اپنے فارورڈز کو کئی اچھے پاس دیے لیکن وہ ان سے فائدہ اٹھانے میں ناکام رہے۔

جنوبی کوریائی فارورڈز یا تو گیند تک پہنچنے میں ہی ناکام رہے یا پھر ان کی شاٹ گول سے دور تماشائیوں اور فوٹوگرافرز کو اپنا نشانہ بناتی رہیں۔

ادھر روسی کھلاڑیوں کا حال بھی زیادہ مختلف نہ تھا اور پہلے ہاف میں ایک اچھی فری کک کے علاوہ روسی ٹیم کا کوئی قابلِ ذکر حملہ دیکھنے میں نہیں آیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption روس کی جانب سے سٹرایئکر الیگزینڈر کرازاکوف نےگول کر کے میچ برابر کیا

دوسرے ہاف کے آغاز میں میچ میں کچھ تیزی دکھائی دی اور پھر میچ کے 68ویں منٹ میں جنوبی کوریا کی ٹیم روس پر سبقت حاصل کرنے میں کامیاب ہوگئی۔

یہ گول کیون ہو لی کی شاٹ پر روسی کیپر آئیگور اکنفیف کی ناقص کارکردگی کی وجہ سے ہوا۔ کیون لی کی 25 گز سے لگائی گئی یہ شاٹ باآسانی روکی جا سکتی تھی۔

جنوبی کوریا کی برتری کے بعد کھیل تیز ہوگیا اور چھ منٹ بعد ہی روس کی جانب سے سٹرایئکر الیگزینڈر کرازاکوف نےگول کر کے میچ برابر کر دیا۔

کوئیبا کا گرم مرطوب موسم سرد علاقوں سے تعلق رکھنے والے دونوں ممالک کے کھلاڑیوں کے لیے پریشان کن رہا اور گرمی کی وجہ سے ورلڈ کپ میں ممکنہ طور پہلی مرتبہ ہاف کے دوران پانی کا وقفہ بھی ہوا۔

یہ پہلا موقع ہے کہ روس اور جنوبی کوریا کی ٹیمیں ورلڈ کپ کے کسی میچ میں مدِمقابل تھیں۔

یہ دونوں اس ورلڈ کپ میں اپنا پہلا میچ کھیلنے والی 31ویں اور 32ویں یعنی آخری دو ٹیمیں بھی بنیں اور یوں اب ورلڈ کپ میں تمام ٹیموں نے کم از کم ایک میچ کھیل لیا ہے۔

اسی بارے میں