ورلڈ کپ: سواریز کی مخالف کھلاڑی کو کاٹنے کی تفتیش

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ٹی وی فوٹیج سے ایسا لگتا ہے کہ لوئس سواریز نے اٹلی کے دفاعی کھلاڑی جیورجیو چیلینی کو کاندھے پر کاٹا

فٹبال کے عالمی ادارے فیفا نے اطالوی کھلاڑی کو کاٹنے کے الزام کے تحت یوروگوائے کے مشہور کھلاڑی لوئس سواریز کے خلاف انضباطی کارروائی کا آغاز کر دیا ہے۔

فٹبال کی عالمی تنظیم نے سواریز اور یوروگوائے کی فٹبال ٹیم کو نوٹس دیتے ہوئے بدھ کی شب نو بجے تک جواب دینے کا وقت دیا ہے۔

لوئس سواریز کو الزام ثابت ہونے کی صورت میں عالمی کپ سے باہر ہونے اور طویل عرصے تک پابندی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

برازیل میں موجود بی بی سی ریڈیو فائیو لائیو کے رچرڈ کونوے کے مطابق:’فیفا اس معاملے کو جلد از جلد حل کرنا چاہتی ہے تاکہ فٹبال ورلڈ کپ کے دیگر معاملات پر توجہ دے سکے۔‘

اگر اس بات کو سامنے رکھا جائے کہ کسی مخالف کھلاڑی پر تھوکنے کی صورت میں کم سے کم چھ میچوں کی پابندی لگائی جا سکتی ہے تو سمجھا جا سکتا ہے کہ کاٹنے کی صورت میں سزا کیا ہو سکتی ہے۔

اس سے سزا دینے کا جو معیار سامنے آتا ہے اُس کی بنا پر کہا جا سکتا ہے کہ کاٹنے کا الزام ثابت ہونے کی صورت میں لوئس

سواریز کا عالمی کپ ختم ہو جائے گا۔

میچ میں اس مبینہ واقعے پر ریفری مارکو روڈریگز نے کوئی نوٹس نہیں لیا ہے، تاہم فیفا الزام ثابت ہونے پر سواریز کو سزا دے سکتی ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption سواریس اور اطالوی کھلاڑی کو مبینہ طور کاٹنے کے بعد اپنا منہ پکڑے بیٹھے ہیں

یوروگوائے کے سٹار کھلاڑی پر الزام ہے کہ انھوں نے میچ کے دوران اٹلی کے دفاعی کھلاڑی کو مبینہ طور پر کاٹ لیا تھا۔

میچ کی ٹی وی فوٹیج سے ایسا لگتا ہے کہ سواریز نے اٹلی کے دفاعی کھلاڑی جیورجیو چیلینی کو کاندھے پر کاٹا ہے۔

اٹلی اور یوروگوائے کے مابین جب میچ بغیر کسی گول کے برا بر تھا تو لوئس سواریز نے میچ کے 79 ویں منٹ میں اٹلی کی ڈی کے اندر اپنا سر جیورجیو چیلینی کے کاندھے پہ مارا۔

چیلینی فوراً زمین پر گرگئے اور پھر اٹھ کر کندھے سے شرٹ کو نیچے کر کے میچ ریفری کو بتانے کی کوشش کی کہ لوئیس سواریز

نے ان کے کندھے پر کاٹا ہے۔ میچ ریفری نے اس معاملے کا کوئی نوٹس نہ لیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption لوئس سواریز اپنے دانت پکڑے ہیں جس سے لگتا ہے کہ اطالوی کھلاڑی نے کاندھا ان کے منھ پر مارا جس سے انھیں دانتوں پر چوٹ آئی

جب اٹلی کے کھلاڑی جیورجیو اپنے کندھے سے شرٹ نیچے کر کے گراونڈ پر بیٹھے تھے تو اٹلی کے کھلاڑی ریفری مارکو روڈریگز کو بتانے کی کوشش کرتے رہے کہ سواریز نے کیا کیا ہے لیکن ریفری نے ان کی نہ سنی۔

اسی دوران یوروگوائے کے فاروڈ گاستون رامیریس نے جیورجیو چیلینی کی شرٹ نیچے کرنے کی کوشش کی۔

چیلینی نے میچ کے بعد اٹلی کے ٹی وی چینل رائے ٹی وی سے بات کرتے ہوئے کہا: ’سواریز کو ریڈ کارڈ نہ دکھانے کا فیصلہ مضحکہ خیز تھا۔ اس کا زمین پر گر جانا سمجھ میں آتا ہے کیونکہ اسے بہت اچھی طرح معلوم تھا کہ اس نے کچھ ایسا کیا ہے جو اسے نہیں کرنا چاہیے تھا۔‘

لوئس سواریز دو بار پہلے بھی میچ کے دوران کھلاڑی کو کاٹنے کے الزام میں دس میچوں کی پابندی کا سامنا کر چکے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption لوئس سواریز اور اطالوی کھلاڑی تصادم کے بعد زمین پر گرے ہوئے ہیں اسی تصادم کے دوران مبینہ طور پر سواریس نے اطالوی کھلاڑی کو کاندھے پر کاٹ لیا

گذشتہ سال اپریل میں سواریز کو انگلش پریمیئر لیگ کے میچ میں چیلسی فٹبال کلب کے کھلاڑی ایوانوویچ کو کاٹنے پر دس میچوں کی پابندی کا سامنا کرنا پڑا تھا۔

اس سے قبل سنہ 2010 میں بھی ان پر ہالینڈ کے ایندہووین کلب کے اتھمان بکال کو کاندھے پر کاٹنے پر سات میچوں کی پابندی عائد کی گئی تھی۔

جبکہ سنہ 2010 کے کوارٹر فائنل میں انھوں نے گھانا کے خلاف کھیلےگئے میچ میں مخالف ٹیم کاگول ہاتھ سے روکا تھا جس پر ان کو ریڈ کارڈ دکھا کر میچ سے باہر کر دیا گیا تھا۔

گھانا کو اس کے نتیجے میں پنلٹی ملی جس کا وہ فائدہ نہ اٹھا سکے اور میچ بغیر کسی گول کے پنلٹی شوٹ آؤٹ پر چلا گیا جسے یوروگوائے نے 4-2 سے جیت لیا۔

اسی بارے میں