فٹبال ورلڈکپ: رونالڈو کی ٹیم آگے جائے گی یا گھر؟

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption رونالڈو اس ورلڈ کپ میں اس کارکردگی کا مظاہرہ نہیں کر پائے جس کی ان سے توقع تھی

برازیل میں 20ویں فٹبال ورلڈ کپ میں جمعرات کو آخری دو گروپوں جی اور ایچ میں شامل ٹیمیں اپنے آخری گروپ میچ کھیلیں گی اور ان میچوں میں پرتگال، گھانا، روس اور الجزائز کی ٹیموں کے ٹورنامنٹ میں رہنے یا اخراج کا فیصلہ ہو گا۔

پہلے گروپ جی کے دو میچ برطانوی وقت کے مطابق شام پانچ بجے منعقد ہوں گے اور پھر گروپ ایچ کی ٹیمیں رات نو بجے مدِمقابل ہوں گی۔

گروپ جی

اس گروپ کا پہلا میچ یورپی ملک پرتگال اور گھانا کی ٹیموں کے مابین ہوگا اور فٹبال کے شائقین کرستیانو رونالڈو کی ٹیم کے اس ورلڈ کپ میں مستقبل کا فیصلہ ہوتا دیکھیں گے۔

پرتگال کی ٹیم اور رونالڈو دونوں اس ورلڈ کپ میں اس کارکردگی کا مظاہرہ نہیں کر پائے جس کی ان سے توقع تھی اور اس وقت وہ اپنے گروپ میں ایک پوائنٹ کے ساتھ آخری نمبر پر ہے۔

گھانا کی ٹیم کا بھی پوائنٹ تو ایک ہی ہے لیکن گولوں کا فرق بہتر ہونے کی وجہ سے اسے تیسری پوزیشن حاصل ہے۔

ان دونوں ٹیموں کے اگلے مرحلے میں جانے کا بنیادی دارومدار گروپ کے دوسرے میچ کے نتیجے پر ہے۔

اگر گروپ کے دوسرے میچ میں جرمنی امریکہ سے ہار گیا یا ان کا میچ برابر رہا تو گھانا اور پرتگال کا میچ کوئی بھی جیتے دونوں ہی ٹیمیں ورلڈ کپ سے باہر ہو جائیں گی۔

تصویر کے کاپی رائٹ REUTERS
Image caption جرمنی کی ٹیم ملر سے پہلے میچ جیسی کارکردگی دہرانے کی متمنی ہوگی

صرف امریکہ کی شکست ہی ان دونوں ٹیموں کے لیے امید کی واحد کرن ہے اور اس صورت میں بھی گولوں کا فرق اہم کردار ادا کرے گا۔

گھانا اس وقت پوائنٹس ٹیبل پر گولوں کے فرق کے خانے میں منفی ایک اور پرتگال منفی چار پر ہے۔

اس کا مطلب یہ ہے کہ دوسرے میچ میں امریکہ کی شکست کی صورت میں اگلے راؤنڈ میں جانے کے لیے گھانا کو پرتگال کے خلاف یہ میچ کم از کم تین گولوں کے فرق سے جیتنا ہوگا جبکہ پرتگال کے لیے فتح کے ساتھ ساتھ کم از کم پانچ گولوں کا فرق لازمی ہوگا۔

جرمنی اور امریکہ کی ٹیمیں اپنا میچ برابر کھیل کر باآسانی دوسرے راؤنڈ میں جا سکتی ہیں جبکہ جرمنی اگر یہ میچ ہار جاتا ہے تو اس کا گولوں کا بہتر فرق اسے اگلے راؤنڈ میں پہنچانے میں مددگار ثابت ہو سکتا ہے۔

امریکہ کی شکست اور گھانا اور پرتگال کا میچ فیصلہ کن ہونا امریکہ کو پوائنٹس کے لحاظ سے ان دونوں میں سے ایک ٹیم کے برابر لا کھڑا کرے گا اور پھر اس گروپ سے جرمنی کے ہمراہ ناک آؤٹ راؤنڈ میں جانے والی ٹیم کا فیصلہ گولوں کا فرق کرے گا۔

گروپ ای

جمعرات کو پہلے مرحلے کے آخری دو میچوں میں گروپ ایف میں الجزائر کی ٹیم روس جبکہ بیلجیئم کی ٹیم جنوبی کوریا کے مدِمقابل ہوگی۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption الجزائر نے اس ورلڈ کپ میں اپنی کارکردگی سے مبصرین اور ماہرین کو حیران کیا ہے

بیلجیئم اس گروپ سے پہلے ہی ناک آؤٹ مرحلے کے لیے کوالیفائی کر چکا ہے اور اب اس کے ساتھ آگے جانے کے لیے الجزائر اور روس میں اصل مقابلہ ہے۔

الجزائر نے اس ورلڈ کپ میں اپنی کارکردگی سے مبصرین اور ماہرین کو حیران کیا ہے اور اگر وہ اگلے راؤنڈ میں جاتا ہے تو یہ پہلا موقع ہوگا کہ الجزائر ورلڈ کپ کا ناک آؤٹ راؤنڈ کھیلے گا۔

الجزائر کو اگلے راؤنڈ میں اپنی جگہ یقینی بنانے کے لیے روس کے خلاف میچ جیتنا ہوگا اور برابری کی صورت میں اسے بیلجیئم اور جنوبی کوریا کے میچ کے نتیجے کا انتظار کرنا پڑے گا۔

روس کے پاس آگے جانے کے لیے یہ میچ جیتنے کے سوا کوئی اور چارہ نہیں۔

گروپ کی چوتھی ٹیم جنوبی کوریا کے لیے اگلے راؤنڈ تک رسائی اس وقت سب سے مشکل ہے کیونکہ اسے نہ صرف اب تک ناقابلِ شکست بیلجیئم کو ہرانا ہوگا بلکہ یہ فتح کم از کم چار گول کے فرق سے ہونی چاہیے۔

اگر ایسا نہ ہوا تو نہ صرف جنوبی کوریا کا ورلڈ کپ میں سفر اپنے اختتام کو پہنچ جائے گا بلکہ اس ورلڈ کپ سے ایشیائی ٹیموں کا بھی مکمل صفایا ہو جائے گا۔

اسی بارے میں