جیمز اینڈرسن پر بدتمیزی کا الزام عائد

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption اگر جرم ثابت ہو گیا تو جیمز اینڈرسن پر چار ٹیسٹ میچوں کی پابندی عائد ہو سکتی ہے

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) نے انگلینڈ کے بولر جیمز اینڈرسن پر بھارتی آل راؤنڈر روندرا جڈیجا کو پہلے ٹیسٹ کے دوران گالی اور دھکا دینے پر بدتمیزی کا الزام عائد کر دیا ہے۔

یہ واقعہ مبینہ طور پر ٹرینٹ بریج ٹیسٹ کے دوسرے دن اس وقت پیش آیا جب دونوں ٹیمیں کھانے کے لیے میدان سے باہر جا رہی تھیں۔

انگلینڈ اور ویلز کرکٹ بورڈ نے ایک بیان میں کہا ہے کہ جیمز اینڈرسن نے واضح طور پر ان الزامات کی تردید کرتے ہوئے روندرا جڈیجا کے خلاف شکایت درج کروائی ہے۔

اگر 31 سالہ جیمز اینڈرسن پر جرم ثابت ہو گیا تو ان پر چار ٹیسٹ میچوں کی پابندی عائد ہو سکتی ہے۔

آئی سی سی کوڈ آف کنڈکٹ درجہ سوم کے تحت جرائم

درجہ سوم کے الزامات ایک عدالتی کمشنر کے پاس فیصلے کے لیے بھیج دیے گئے ہیں جو 14 دنوں کے اندر اس کیس کی سماعت کرے گا۔

الزامات ثابت ہو جانے کی صورت میں چار سے آٹھ پوائنٹس تک کی معطلی ہوتی ہے اور دو پوائنٹس کی معطلی کا مطلب ایک ٹیسٹ میچ کی پابندی ہے۔

جیمز اینڈرسن اور روندرا جڈیجا کے درمیان یہ تلخ کلامی اس وقت ہوئی جب وہ میدان سے باہر سے جا رہے تھے۔

دوسری جانب انگلینڈ کرکٹ بورڈ نے اس واقعے کو معمولی قرار دیا ہے۔

بی بی سی ریڈیو فائیو لائیو کے پیٹ مرفی کا کہنا ہے کہ انگلینڈ اور بھارتی کرکٹ بورڈوں نے اس معاملے کو حل کرنے کی کوشش کی ہے، تاہم ’میں سمجھتا ہوں کہ بھارتی کپتان مہندر سنگھ دھونی اس معاملے کو آگے لے جانا چاہتے ہیں۔‘

ادھر جیمز اینڈرسن کا کہنا ہے کہ روندرا جڈیجا ان کی جانب دھمکاتے ہوئے بڑھے اور انھوں نے صرف اپنے تحفظ کے لیے اپنے ہاتھ کھڑے کیے اور یہ سب کچھ صرف چند لمحوں کے دوران ہوا۔

درین اثنا بھارتی کرکٹ ٹیم کے مینیجر سنیل دیو کا کہنا ہے کہ جیمز اینڈرسن کے خلاف شکایت بھارتی کھلاڑیوں اور کوچ ڈنکن فلیچر کے مشورے کے بعد درج کی گئی ہے۔

سنیل دیو نے کرکٹ ویب سائٹ کرک انفو کو بتایا کہ سب نے شکایت کی ہے کہ اینڈرسن نے جڈیجا کو چھوا اور انھیں دھکا دیا۔

ان کا کہنا تھا کہ ’یہ ایک حساس معاملہ ہے اور آپ کسی کو دھکا نہیں دے سکتے اور اسی لیے میں نے میچ ریفری سے شکایت کی۔‘

اسی بارے میں