غزہ کی حمایت پر کرکٹر معین علی کو وارننگ

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption معین علی جب بھارت کے خلاف جاری سیریز کے تیسرے ٹیسٹ میچ کے دوسرے روز میدان میں اترے تو انھوں نے اپنی کلائی پر ایک بینڈ پہن رکھا تھا

بین الاقوامی کرکٹ کونسل (آئی سی سی) نے انگلینڈ کے کرکٹر معین علی کو اپنی کلائی پر غزہ کی حمایت میں بینڈ پہننے پر متنبہ کیا ہے۔

آئی سی سی کے قوانین کے مطابق کھلاڑیوں کو کھیل کے میدان میں سیاسی، مذہبی یا نسل پرستانہ پیغامات والی کسی بھی چیز پہننے کی اجازت نہیں ہوتی۔

غزہ بحران پر جرمنی منقسم

دنیا بھر میں غزہ کی حمایت میں مظاہرے

آئی سی سی کے ایک ترجمان نے بی بی سی سپورٹس کو بتایا کہ معین کو متنبہ کیا گیا ہے کہ وہ آئندہ ایسے بینڈز مت پہنیں۔

آئی سی سی کے مطابق معین علی کو میچ ریفری نے بتایا کہ انھیں کھیل کے میدان سے باہر اپنے خیالات کے اظہار کی آزادی حاصل ہے تاہم وہ میدان میں ایسا نہیں کر سکتے۔

ترجمان کے مطابق معین علی کو مستقبل میں بین الااقوامی میچوں کے دوران ایسے بینڈز پہننے پر متنبہ کیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ معین علی جب بھارت کے خلاف جاری سیریز کے تیسرے ٹیسٹ میچ کے دوسرے روز میدان میں آئے تو انھوں نے اپنی کلائی پر ایک بینڈ پہن رکھا تھا جس پر ’سیو غزہ (غزہ کو بچاؤ)‘ اور فلسطین کی آزادی کا نعرہ لکھا ہوا تھا۔

اس سے قبل انگلینڈ کرکٹ بورڈ نے معین علی کی حمایت کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ انھوں نے کچھ غلط نہیں کیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption اس سے قبل انگلینڈ کرکٹ بورڈ نے معین علی کی حمایت کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا کہ انھوں نے کچھ غلط نہیں کیا

کھیل میں لباس اور آلات کے حوالے سے آئی سی سی قوانین کی شق 19 ایف کے مطابق کھلاڑیوں کو لباس کے ذریعے پیغامات دینے کی اجازت نہیں ہوتی جب تک متعلقہ بورڈ کی پہلے سے اجازت نہ لی گئی ہو۔ تاہم سیاسی پیغامات کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔

یاد رہے کہ غزہ میں جاری اسرائیلی کارروائی کے خلاف دنیا بھر میں مظاہرے کیے جا رہے ہیں جن میں مسلمانوں کے علاوہ دیگر مذاہب کے افراد اور مختلف قومیت کے لوگ بھی حصہ لے رہے ہیں۔

اس کے علاوہ دنیا کے مختلف ممالک میں بالخصوص امریکہ میں یہودی برادری میں بھی اسرائیلی کارروائی کے خلاف چند لوگوں نے آواز اٹھائی ہے۔

اسی بارے میں