قصور وار نہ اینڈرسن، نہ جڈیجا: آئی سی سی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption یہ واقعہ مبینہ طور پر ٹرینٹ بریج ٹیسٹ کے دوسرے دن اس وقت پیش آیا تھا جب دونوں ٹیمیں کھانے کے لیے میدان سے باہر جا رہی تھیں

انٹرنیشل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) کا کہنا ہے کہ انگلینڈ کے بولر جیمز اینڈرسن اور بھارتی آل راؤنڈر روندرا جڈیجا نےاس کے ضابطۂ اخلاق کی خلاف ورزی نہیں کی۔

خیال رہے کہ آئی سی سی نے انگلش بولر جیمز اینڈرسن پر بھارتی آل راؤنڈر روندرا جڈیجا کو پہلے ٹیسٹ کے دوران گالی اور دھکا دینے پر بدتمیزی کا الزام عائد کیا تھا۔

یہ واقعہ مبینہ طور پر ٹرینٹ بریج ٹیسٹ کے دوسرے دن اس وقت پیش آیا تھا جب دونوں ٹیمیں کھانے کے لیے میدان سے باہر جا رہی تھیں۔

اگر جیمز اینڈرسن پر جرم ثابت ہو جاتا تو ان پر چار ٹیسٹ میچوں کی پابندی عائد ہو سکتی تھی۔

آسٹریلیا میں موجود عدالتی کمشنر گورڈن لیوس نے ویڈیو کانفرنس کے ذریعے چھ گھنٹوں کی سماعت کے بعد اینڈرسن اور جڈیجا کو بری کر دیا۔

عدالتی کمشنر نے اس واقعے کی سماعت کے دوران بھارت اور انگلینڈ کے کھلاڑیوں کے بیانات سنے اور وکلا نے ان پر جرح کی۔

عدالتی کمشنر کے اس فیصلے کے بعد جیمز اینڈرسن سات اگست سے اوول میں شروع ہونے والے ٹیسٹ میچ کے لیے دستیاب ہوں گے۔

جیمز اینڈرسن نے ساؤتھیمپٹن ٹیسٹ میں بھارت کے سات کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا تھا۔

اینڈرسن کو اپنے ہم وطن سر ایئن بوتھم کا ٹیسٹ کرکٹ میں 383 وکٹوں کا برطانوی ریکارڈ توڑنے کے لیے صرف 12 وکٹوں کی ضرورت ہے۔

اسی بارے میں