فاسٹ بولروں کی عمدہ بولنگ، انگلینڈ کا پلہ بھاری

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption سٹیو براڈ نے پہلی اننگز میں انڈیا کے چھ بیٹسمینوں کو آؤٹ کر کے ٹیم کی پوزیشن کو مضبوط بنا دیا ہے

انگلش فاسٹ بولروں نے اولڈ ٹریفورڈ کے میدان میں چوتھے ٹیسٹ میچ کے پہلے روز انڈیا کو 152 رنز پر آؤٹ کر کے ٹیم کو مضبوط پوزیشن میں لاکھڑا کیا ہے۔

انڈیا کے کپتان مہندر سنگھ دھونی نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کا فیصلہ کیا لیکن انھیں جلد ہی احساس ہوگیا کہ انھوں نے فاسٹ بولروں کے لیے مددگار پچ پر پہلے بیٹنگ کرنے کا فیصلہ کر کے غلطی کی ہے۔ مہندر سنگھ دھونی کو اس وقت میدان میں اترنا پڑا جب ٹیم کا مجموعی سکور آٹھ رنز تھا اور اس کے چار ٹاپ آرڈر بیٹسمین پویلین لوٹ چکے تھے۔

تفصیلی سکور کارڈ

پانچ ٹیسٹ میچوں کی سیریز میں دونوں ٹیموں نے ایک ایک ٹیسٹ میچ جیت رکھا ہے۔

انڈیا کی پہلی وکٹ آٹھ کے مجموعی سکور پر گری اور پھر اسی سکور پر مزید تین وکٹیں گرگئیں۔

بھارت کی ٹیم نے ایک اننگز میں صفر پر آؤٹ ہونے کا ورلڈ ریکارڈ بھی برابر کر دیا۔ بھارت کے جو چھ بیٹسمین بغیر سکور بنائے پویلین لوٹ گئے ان میں مرلی وجے، چیتشور پچارا، ویرات کوہلی، رویندرا جڈیجہ، بھونیشور کمار اور پنکج سنگھ شامل ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption دھونی جب کریز پر آئے تو ان کی ٹیم انتہائی مشکلات کا شکار تھی

پہلے آؤٹ ہونے والے کھلاڑی گوتم گھمبیر تھے جو کافی عرصے بعد ٹیسٹ ٹیم میں واپس آئے ہیں۔ گوتم گھمبیر جنہیں شیکھر دھاون کی جگہ کھلایا گیا ہے، چار کے انفرادی سکور پر سٹیو براڈ کی گیند پر سلپ میں کیچ آؤٹ ہو گئے۔ موجودہ سیریز میں عمدہ بیٹنگ کرنے والے مرلی وجے بغیر کوئی سکور بنائے جمیز اینڈرسن کا پہلا نشانہ بنے۔

ویرات کوہلی ایک بار پھر کوئی سکور نہ بنا سکے اور جیمز اینڈرسن کا اگلا نشانہ بنے۔ آٹھ کے مجموعی سکور پر چوتھی وکٹ گرگئی جب چیتشور پجارا صفر پر آؤٹ ہو کر پویلین لوٹ گئے۔

کپتان دھونی نے اجنکے کے ساتھ مل کر ٹیم کا سکور 62 رنز تک پہنچایا۔ اجنکے 62 کےمجموعی سکور پر نوجوان فاسٹ بولر کرس جورڈن کی گیند ایک آسان کیچ تھما کر پویلین لوٹ گئے۔ صرف ایک رنز کے اضافے کے بعد رویندرا جاڈیجا بھی جمیز اینڈرسن کا شکار بن گئے۔

کپتان مہندر سنگھ دھونی کے علاوہ کوئی دوسرا بیٹسمین انگلش بولروں کا مقابلہ نہ کر سکا۔ دھونی نے 71 رنز کی عمدہ اننگز کھیلی۔ دھونی کے علاوہ روی چندرن ایشون نے 40 رنز کی عمدہ اننگز کھیلی۔

گزشتہ میچوں کے برعکس اس بار انگلش فاسٹ بولروں نے بھارت کے آخری کھلاڑیوں کو کھل نہ کھیلنے دیا اور اوپر تلے چار وکٹیں سمیٹ کر بھارت کی اننگز کو 152 پر سمیٹ دیا۔ سٹیو براڈ نے چھ وکٹیں حاصل کیں جبکہ جمیز اینڈرسن کے حصے میں تین وکٹیں آئیں۔ ایک کھلاڑی کو کرس جورڈن نے آؤٹ کیا۔

انگلینڈ کی اننگز کا آغاز زیادہ اچھ نہیں تھا اور دونوں اوپنر جلد ہی پویلین لوٹ گئے۔ پہلے سیم روبسن اور پھر کپتان ایلسٹر کک آؤٹ ہو ئے۔

این بیل اور گیری بیلنس نے عمدہ بیٹنگ کی اور 77 رنز کی پارٹنرشپ بنائی۔ گیری بیلنس پہلے دن کے کھیل کے اختتامی لمحات میں نوجوان بھارتی فاسٹ بولر ورون کا دوسرا نشانہ بن گئے۔ میچ کے اختتام پر این بیل 45 اور نائٹ واچ مین کرس جورڈن صفر پر کریز پر موجود تھے۔

اپنا پہلا ٹیسٹ کھیلنے والے ورون ایرن نے ماہرین کو متاثر کیا اور مسلسل تیز رفتار سے بولنگ کرتے انگلینڈ کی گرنے والی تین میں سے دو وکٹیں حاصل کیں۔

اسی بارے میں