گال ٹیسٹ: سری لنکن اننگز کا عمدہ آغاز

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption پاکستان کی جانب سے جنید خان نے پہلی وکٹ حاصل کی

گال میں کھیلے جانے والے پہلے ٹیسٹ میچ کے دوسرے دن کھیل کے اختتام پر سری لنکا نے پاکستان کے خلاف ایک وکٹ کے نقصان پر 99 رنز بنائے ہیں۔

سری لنکا کو پاکستان کی برتری ختم کرنے کے لیے مزید 352 رنز کی ضرورت ہے اور پہلی اننگز میں اس کی نو وکٹیں باقی ہیں۔

دوسرے دن کھیل کے اختتام پر کمار سنگا کارا اور کوشل سلوا کریز پر موجود تھے اور دونوں نے بالترتیب 36 اور 38 رنز بنائے ہیں۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

سری لنکا کی جانب سے اوپل تھرنگا اور کوشل سلوا نے اننگز کا آغاز کیا۔

سری لنکا کا آغاز اچھا نہ تھا اور صرف 24 رنز کے مجموعی سکور پر اوپل تھرنگا 19 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئے۔

پاکستان کی جانب سے جنید خان نے پہلی وکٹ حاصل کی۔

اس سے قبل ٹیسٹ میچ کے دوسرے دن چائے کے وقفے سے قبل پاکستان کی پوری ٹیم 451 رنز بنا کر آؤٹ ہو گئی تھی۔

پاکستان کی جانب سے یونس خان اور اسد شفیق نے 261 رنز چار وکٹوں کے نقصان پر دوسرے دن کے کھیل کا آغاز کیا۔

دونوں بلے بازوں نے عمدہ بیٹنگ کرتے ہوئے پانچویں وکٹ کی شراکت میں 137 رنز کا اضافہ کیا۔

میچ کے دوسرے روز پاکستان کی پانچوں وکٹ 293 رنز کے مجموعی سکور پر اس وقت گری جب اسد شفیق 75 رنز بنا کر پویلین لوٹ گئے۔

پاکستان کی جانب سے یونس خان نے 15 چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 177 رنز جبکہ اسد شفیق نے آٹھ چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے 75 رنز بنائے۔

سری لنکا کی جانب سے دلرووان پریرا نے پانچ، رنگانا ہیرات نے تین اور شمندا ارنگا نے دو کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

گال ٹیسٹ میچ کے پہلے دن کی خاص بات یونس خان کی ٹیسٹ میچوں میں 24ویں سنچری تھی، انھوں نے 23 سنچریاں بنانے والے جاوید میانداد کا ریکارڈ توڑ دیا۔

پاکستان کی جانب سے سب سے زیادہ ٹیسٹ سنچریوں کا ریکارڈ انضمام الحق کے پاس ہے جنھوں نے 25 ٹیسٹ سنچریاں بنا رکھی ہیں۔

اسی بارے میں