کولمبو ٹیسٹ: سرفراز کی سنچری، ہیراتھ کی 9 وکٹیں

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters AFP
Image caption اس اننگز کی خاص بات سرفراز احمد کی سنچری اور ہیراتھ کی 9 وکٹیں تھیں

کولمبو ٹیسٹ میچ کے تیسرے روز کھانے کے وقفے تک پاکستانی ٹیم اپنی پہلی اننگز میں 332 رنز بنا کر آوٹ ہوگئی ہے اور بارہ رنز کی برتری حاصل کر لی ہے۔

تیسرے روز کی صبح پاکستان کی بیٹنگ کو مشکلات سے نکالنے والے وکٹ کیپر بیٹسمین سرفراز احمد رہے جنھوں نے 103 رنز بنائے۔ یہ سرفراز احمد کی اور پاکستان کے کسی بھی وکٹ کیپر بیٹسمین کی سری لنکا میں پہلی ٹیسٹ سنچری تھی۔

دوسری جانب سری لنکا کے بولر رنگنا ہیراتھ نے شاندار بولنگ کا مظاہرہ کرتے ہوئے 9 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا۔

دوسرے روز کھیل کے اختتام پر پاکستان نے پہلی اننگز میں چھ وکٹوں کے نقصان پر 244 رنز بنا رکھے تھے اور سری لنکا کو 76 رنز کی برتری حاصل تھی۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

پاکستانی اننگز میں اوپنرز خرم منظور اور احمد شہزاد نے ٹیم کو 47 رنز کا نسبتاً بہتر آغاز فراہم کیا۔

اس شراکت کا خاتمہ رنگنا ہیراتھ نے خرم کو آؤٹ کر کے کیا۔

خرم کے جانے کے بعد احمد شہزاد نے نہ صرف نصف سنچری مکمل کی بلکہ اظہر علی کے ساتھ مل کر دوسری وکٹ کے لیے بھی 63 رنز بنائے۔

احمد شہزاد 58 رنز بنانے کے بعد پریرا کی واحد وکٹ بنے۔ اس موقع پر پاکستان کا سکور 110 رنز تھا۔

پاکستان کی اگلی تین وکٹیں سکور میں صرف 30 رنز کے اضافے کے دوران گر گئیں۔ یہ تینوں وکٹیں بھی ہیراتھ نے حاصل کیں۔

ایک موقع پر 140 کے مجموعی سکور پر پاکستان کے پانچ کھلاڑی آؤٹ ہو چکے تھے لیکن پھر سرفراز احمد نے اسد شفیق کے ساتھ مل کر 93 رنز کی اہم شراکت قائم کی۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters
Image caption پاکستان کی جانب سے جنید خان نے پانچ اور وہاب ریاض نے تین کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا

اسد شفیق دوسرے دن آؤٹ ہونے والے چھٹے اور آخری پاکستانی کھلاڑی تھے۔ انھوں نے 42 رنز بنائے اور ہیراتھ کی پانچویں وکٹ بنے۔

جب کھیل ختم ہوا تو سرفراز احمد نصف سنچری بنانے کے بعد 66 اور عبدالرحمان ایک رن پر ناٹ آؤٹ تھے۔

اس سے قبل سری لنکا کی ٹیم پہلے روز کے سکور میں کُل 59 رنز کا اضافہ کر کے 320 رنز بنا کر آؤٹ ہوگئی۔

پاکستان کی جانب سے جنید خان نے 87 رنز دے کر پانچ اور ریاض نے 88 رنز دے کر تین وکٹیں حاصل کیں۔

جمعرات کو شروع ہونے والے ٹیسٹ میچ میں سری لنکا نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

یاد رہے کہ پاکستانی ٹیم گال ٹیسٹ میں سات وکٹوں کی ہزیمت کے سبب سری لنکا کے خلاف پانچ سال میں تیسری ٹیسٹ سیریز ہارنے کے خطرے سے دوچار ہے۔

پاکستانی ٹیم مصباح الحق کی قیادت میں انگلینڈ کے خلاف کلین سویپ کے بعد سے ایک بھی ٹیسٹ سیریز نہیں جیت سکی ہے۔ اس دوران اس نے تین سیریز برابر کھیلی ہیں اور دو میں اسے شکست ہوئی ہے ۔

اسی بارے میں