آئی پی ایل کو ختم کر دینا چاہیے: ایئن بوتھم

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption آئی پی ایل کرکٹ کی دنیا کی ترجیحات تبدیل کر رہا ہے: سر ائین بوتھم

انگلینڈ کے سابق آل راؤنڈر سر ایئن بوتھم نے کہا ہے کہ انڈین پریمیئر لیگ ضرورت سے زیادہ ’طاقتور‘ ہے اور کرکٹ کے مستقبل کے لیے اس ختم کر دیا جانا چاہیے۔

انگلینڈ کے سابق کپتان کا کہنا ہے اور دنیائے کرکٹ کے بہترین آل روانڈروں میں سے ایک سر ائین بوتھم نے کہا کہ آئی پی ایل ’جوئے اور فکسنگ کے لیے بہترین موقع فراہم کرتی ہے‘ اور انھیں یقین ہے کہ اس میں حصہ لینے والے ’کھلاڑی اس کے غلام ہیں۔‘

58 سالہ بوتھم کے مطابق ’میں آئی پی ایل کے حوالے سے فکر مند ہوں، اصل میں یہ سب نہیں ہونا چاہیے۔‘

بدھ کو لارڈز میں ایم سی سی 2014 سپرٹ آف کرکٹ کے موضوں پر لیکچر دیتے ہوئے سر ایئن بوتھم نے کہا کہ آئی پی ایل کرکٹ کی دنیا کی ترجیحات تبدیل کر رہا ہے۔

انھوں نے مزید کہا کہ آئی پی ایل ہر سال دو ماہ کے لیے دنیا کے بہترین کھلاڑیوں کی مالک بن جاتی ہے اور ان کھلاڑیوں کو لانے والے کرکٹ بورڈز کو ایک روپیہ بھی نہیں دیا جاتا۔

انٹرنیشنل کرکٹ کونسل کی کرکٹ سے بدعنوانی کو ختم کرنے والی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے سر ایئن بوتھم نے کہا ’ہم نے آئی پی ایل کے دوران چند کھلاڑیوں کی بدعنوانی کا پردہ چاک ہوتے دیکھا لیکن سوال یہ پیدا ہوتا کہ کچھ کھلاڑیوں کو جیل بھیجنے سے یہ مسئلہ حل نہیں ہو سکتا۔‘

خیال رہے کہ بھارت میں سنہ 2008 سے آئی پی ایل کا انعقاد کیا جا رہا ہے اور اسے کرکٹ کا سب سے امیر ترین ٹورنامنٹ قرار دیا جاتا ہے۔

اسی بارے میں