’الزامات کا دفاع کروں گا‘: کرس کینز

Image caption اپنی معصومیت ثابت کرنے کے لیے جو بھی ہو سکا کروں گا: کرس کینز

نیوزی لینڈ کے سابق آل راؤنڈر کرس کینز نے کہا ہے کہ انھیں معلوم ہے کہ برطانوی پولیس نے ان کے خلاف ’جھوٹا‘ بیان حلفی دینے پر مقدمہ چلانے کا ارادہ رکھتی ہے لیکن وہ اپنے خلاف الزامات کا دفاع کریں گے۔

لندن میٹرو پولیس کی جانب سے یہ بیان سامنے آیا تھا کہ کرس کینز کے خلاف جھوٹا بیانِ حلفی دینے پر کارروائی ہو سکتی ہے۔

انڈین پریمئر لیگ کے اس وقت کے سربراہ للت مودی نے سنہ 2012 میں کرس کینز پر جھوٹا بیانِ حلفی دینے کا الزام عائد کیا تھا تاہم کرس کینز نے للت مودی کے خلاف لندن کی ہائی کورٹ میں دعویٰ کر کے یہ مقدمہ جیت لیا تھا۔

کرس کینز کے مطابق وہ اپنی معصومیت ثابت کرنے کے لیے جو بھی ہو سکا کریں گے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ ان پر میچ فکسنگ کے الزامات بےسروپا، بھونڈے اور خوفزدہ کرنے والے ہیں۔

دوسری جانب کراؤن پراسیکیوشن سروس نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ہم اس بات کی تصدیق کر سکتے ہیں کہ ہم نے پولیس کو کرس کینز کے خلاف جھوٹا بیانِ حلفی دینے پر مقدمہ درج کرنے کو کہا ہے۔

ادھر کرس کینز نے جمعے کو ایک بیان میں کہا ہے کہ انھیں کراؤن پراسیکیوشن سروس کی جانب سے مطلع کیا گیا ہے کہ جھوٹا بیانِ حلفی دینے پر ان کے خلاف 25 ستمبر کو کارروائی کی جا سکتی ہے۔

کرس کینز کا کہنا ہے کہ انھیں اس معاملے پر بہت زیادہ مایوسی ہوئی ہے تاہم اب ان کے پاس ایک موقع ہے کہ وہ خود کو ہمیشہ کے لیے بے گناہ ثابت کر دیں۔

نیوزی لینڈ کے سابق آل راؤنڈر کے مطابق وہ امید کرتے ہیں کہ اس فورم کے ذریعے زیادہ معلومات سامنے آئیں گی جس سے لوگوں کو اس ساری صورتِ حال کو سمجھنے میں مدد ملے گی اور اس سارے معاملے میں ملوث ان لوگوں کے عزائم کا بھی پتہ چل جائے گا۔