آسٹریلیا کے خلاف ٹسیٹ سریز جیتنے کی امید

تصویر کے کاپی رائٹ Getty images
Image caption آسٹریلیا کی ٹیم کے لیے تیسرے ٹسیٹ میں شدید مشکلات کا سامنا

آسٹریلوی ٹیم ابوظہبی ٹیسٹ میں بھی نوشتہ دیوار پڑھ چکی ہے۔

پہلے اس کے بولرز سے پاکستانی بیٹسمین آؤٹ نہ ہوسکے اور پھر اس کے بیٹسمینوں سے رنز نہ بن پائے اور پوری ٹیم پہلی اننگز میں صرف 261 رنز پر آٰؤٹ ہوگئی۔

پاکستان کو309 رنز کی بھاری بھرکم برتری حاصل ہوگئی لیکن کپتان مصباح الحق نے اسے فالوآن نہیں کرایا اور دوسری اننگز میں بیٹنگ کو ترجیح دی۔

کھیل ختم ہونے پر پاکستان نے دوسری اننگز میں دو وکٹوں پر 61 رنز بنائے تھے اس طرح اس کی مجموعی برتری 370 رنز تک پہنچ چکی ہے۔

پہلے ہی اوور میں احمد شہزادنے جانسن کو دو چوکے اور ایک چھکا لگایا لیکن آخری گیند انہیں پویلین کا راستہ دکھا گئی۔

جانسن نے اگلے ہی اوور میں محمد حفیظ کے کھاتے میں ایک اور مایوس کن اننگز لکھ دی۔

اکیس رنز پر دو وکٹیں گرنے کے بعد اس سیریز کے ہیرو یونس خان تیسرے ہی اوور میں کریز پر اظہرعلی کے ساتھ موجود تھے۔ کھیل ختم ہونے پر یونس خان سولہ اور اظہرعلی اکیس رنز پر ناٹ آؤٹ تھے۔

اس سے قبل آسٹریلیا نے اپنی پہلی اننگز صرف ایک وکٹ کے نقصان سے شروع کی لیکن کھانے کے وقفے تک یہ نقصان بڑھ کر پانچ وکٹوں کا ہوچکا تھا۔

دبئی ٹیسٹ کے سنچری میکر ڈیوڈ وارنر کو راحت علی نے 19 کے سکور پر پوائنٹ پر یاسر شاہ کے ہاتھوں کیچ کرایا۔

گلین میکسویل نے جارحانہ انداز اختیار کیا لیکن 37 کے سکور پر وہ ذوالفقار بابر کی گیند پر بولڈ ہوگئے۔

نائٹ واچ مین نیتھن لائن کی 15 رنز کی اننگز کو راحت علی نے بولڈ کر کے ختم کیا۔

آسٹریلیا کے لیے سمتھ کا آؤٹ ہونا دھچکہ تھا جو بغیر کوئی رن بنائے ذوالفقار بابر کی گیند پر ایل بی ڈبلیو قرار دیے گئے۔ پاکستان نے یہ وکٹ ریویو کے ذریعے حاصل کی۔

کپتان مائیکل کلارک نے دباؤ کم کرنے کے لیے جارحانہ انداز اپنایا لیکن ان کی وکٹ نے آسٹریلیا کی رہی سہی امیدوں کو بھی ختم کردیا۔

انھیں عمران خان نے خوبصورتی سے ریورس سوئنگ پر 47 کے سکور پر بولڈ کردیا۔

عام طور پر مشکل حالات میں ٹیم کو سنبھالا دینے کے لیے مشہور بریڈ ہیڈن اور مچل جانسن کی وکٹیں لیگ سپنر یاسر شاہ لے اڑے۔

ہیڈن کے بلے کا کنارہ لیتی ہوئی گیند وکٹوں میں جالگی اور مچل جانسن نے سرفراز احمد کے ہاتھوں کیچ ڈراپ ہونے کے بعد اگلی ہی گیند پر محمد حفیظ کو کیچ تھما دیا۔

اپنا دوسرا ٹیسٹ میچ کھیلنے والے مچل مارش کی مزاحمت ایک طرف سے جاری رہی جس کے دوران انھوں نےعمدہ بیٹنگ کرتے ہوئے ایک چھکا اور تیرہ چوکے بھی لگائے لیکن اپنی پہلی ٹیسٹ سنچری سے تیرہ رنز کی دوری پرعمران خان کی گیند پر راحت علی کو کیچ دے بیٹھے۔

محمد حفیظ نے پیٹرسڈل کو 28 رنز پر یاسر شاہ کے ہاتھوں کیچ کراکر آسٹریلوی اننگز سمیٹ دی۔

وکٹوں کے بٹوارے میں عمران خان 60 رنز کے عوض تین اہم وکٹیں حاصل کرکے سب سے آگے رہے ۔

ذوالفقار بابر، یاسر شاہ اور راحت علی کے حصے میں دو دو وکٹیں آئیں۔

اسی بارے میں