وائٹ واش: آسٹریلیا کو بدترین شکست

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption مصباح نے پوری ٹیم کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے کہا کہ ٹیم میں کئی عمدہ نئے کھلاڑی شامل ہوئے ہیں

پاکستان نے ابوظہبی ٹیسٹ میچ میں آسٹریلیا کو 356 رنز سے شکست دے کر 32 سال کے بعد اُسے ٹیسٹ سیریز میں وائٹ واش کر دیا ہے۔

ٹیسٹ سیریز دو صفر سے جیتنے کے نتیجے میں پاکستان نے آئی سی سی کی عالمی ٹیسٹ رینکنگ میں تیسری پوزیشن حاصل کر لی ہے۔ اب جنوبی افریقہ پہلے اور آسٹریلیا دوسرے نمبر پر ہیں۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

ابوظہبی ٹیسٹ کے آخری دن پاکستان نے آسٹریلوی مزاحمت کو کھانے کے وقفے کے بعد قابو کرتے ہوئے 356 رنز کی جیت سے سیریز دو صفر کی شاندار کارکردگی پر ختم کی۔

پاکستان نے 83-1982 کے بعد پہلی مرتبہ آسٹریلیا کے خلاف کلین سویپ کیا ہے۔

یہ ٹیسٹ کرکٹ میں پاکستان کی رنز کے اعتبار سے سب سے بڑی جیت ہے جبکہ آسٹریلیا کی یہ ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ کی تیسری بدترین شکست ہے۔

آسٹریلوی بیٹسمینوں کے پیروں تلے زمین سرکا دینے والے پاکستانی سپنرز تھے۔ ذوالفقار بابر نے 120 رنز کے عوض پانچ وکٹیں حاصل کیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption آسٹریلیا کے بلے باز اب میچ کو برابر کرنے کی کوششوں میں نظر آ رہے تھے

اس میچ میں انھوں نے کل سات وکٹیں حاصل کیں جبکہ سیریز میں ان کی حاصل کردہ وکٹوں کی تعداد 14 رہی۔

یاسر شاہ اور محمد حفیظ نے دو دو وکٹوں کے ساتھ اپنی موجودگی کا احساس دلایا۔

یاسر شاہ نے اس سیریز میں کل 12 وکٹیں حاصل کیں۔

میچ کے آخری دن سمتھ اور مارش نے اننگز شروع کی۔ پہلا سیشن پاکستانی بولروں کے لیے صبر آزما رہا جس میں پاکستانی ٹیم کو صرف مچل مارش ہی کی وکٹ مل سکی۔

وہ 47 رنز بناکر محمد حفیظ کی گیند پر اسد شفیق کے ہاتھوں کیچ ہوئے۔ کھانے کے وقفے کے بعد آسٹریلوی مزاحمت دم توڑتی نظر آئی۔

پاکستانی بولروں نے صرف 13 گیندوں پر تین وکٹیں حاصل کر کے اپنی ٹیم کے لیے حالات آسان کر دیے۔

یاسر شاہ نے سٹیو سمتھ کو سنچری سے صرف تین رنز کی دوری پر ایل بی ڈبلیو کر دیا، جب کہ ذوالفقار بابر نے بریڈ ہیڈن کو صرف 13 رنز پر بولڈ کیا۔

اگلے ہی اوور کی پہلی گیند پر یاسر شاہ کی گیند پر مچل جانسن کھاتہ کھولے بغیر بولڈ ہو گئے۔

مچل سٹارک بھی یاسر شاہ کی زد میں آئے اور دو رنز بنا کر بولڈ ہوئے۔

آسٹریلوی بساط کو 246 رنز پر سمیٹنے والے ذوالفقار بابر تھے جنہوں نے نیتھن لائن کو صفر پر اظہرعلی کے ہاتھوں کیچ کرا دیا۔

دوسرے سیشن میں آسٹریلیا کی پانچ وکٹیں صرف آٹھ رنز پر زمیں بوس ہوئیں۔

اسی بارے میں