آسٹریلوی کھلاڑی ہیوز کی حالت ابھی بھی نازک

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption فل ہیوز نے 2009 سے سنہ 2013 کے درمیان 26 ٹیسٹ ميچوں میں آسٹریلیا کی نمائندگی کی ہے

آسٹریلوی بیٹسمین فلپ ہیوز کی حالت ابھی بھی نازک ہے۔ انھیں سڈنی میں ہونے والے میچ کے دوران منگل کو سر پر گیند لگنے سے شدید چوٹ آئی تھی۔

25 سالہ ہیوز سڈنی کے ایک ہسپتال میں ہیں۔ گذشتہ روز شیفیلڈ شیلڈ کے ایک میچ کے دوران انھیں نیو ساؤتھ ویلز کے بولر شان ایبٹ کا باؤنسر لگا تھا جس کے نتیجے میں وہ پچ پرگر پڑے تھے۔

ہیوز کے سر کا سکین کیا گیا ہے۔ ٹیم کے ڈاکٹر پیٹر برنکر نے کہا: ’فلپ کی حالت میں کوئی تبدیلی نہیں آئی ہے اور ان کی حالت نازک ہے۔‘

بائیں ہاتھ کے آسٹریلوی بیٹسمین کو سٹریچر پر میدان سے باہر لے جایا گیا اور پھر فوراً ایمبولنس پر ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں ان کی سرجری ہوئی ہے اور انھیں کوما میں رکھا گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption شان ایبٹ کے باؤنسر کے نتیجے میں فل ہیوز پچ پرگر پڑے تھے

کرکٹ آسٹریلیا نے اس بات کی بھی تصدیق کی ہے کہ اس دور کے شیفیلڈ شیلڈ میچوں کو منسوخ کر دیا گیا ہے۔

نیوساؤتھ ویلز کے نائب کوچ اور آسٹریلیا کے سابق فاسٹ بولر جیف لاسن نے کہا کہ کھلاڑی اور سٹاف ان کے لیے ’بہت پریشان‘ ہیں۔

انھوں نے بی بی سی سے بات کرتے ہوئے کہا: ’فل نے اپنے کریئر کا بیشتر حصہ نیوساؤتھ ویلز کے لیے کھیلنے میں گزارا۔ ڈریسنگ روم کے بعض کھلاڑی اس کے بہت قریبی دوست ہیں۔ ڈریسنگ روم بہت اداس ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption ایبٹ کو فوری ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں انھیں کوما میں رکھا گیا ہے

’ایبٹ ابھرتے ہوئے سٹار ہیں اور انھوں نے آسٹریلیا کے لیے ابھی کھیلنا شروع کیا ہے۔ وہ فل کے بہت اچھے دوست ہیں۔ انھوں نے کل بہت اچھی بولنگ کی اور کئی باؤنسر بھی پھینکے لیکن آپ جانتے ہیں۔۔۔ وہ اس سے بہت پریشان ہیں۔‘

انھوں نے مزید کہا کہ ’سب یہی چاہتے ہیں کہ وہ صحت یاب ہوں اور پھر سے ویسے ہی ہو جائیں۔ انھیں سب پسند کرتے ہیں۔‘

فل ہیوز نے 2009 سے سنہ 2013 کے درمیان 26 ٹیسٹ ميچوں میں آسٹریلیا کی نمائندگی کرتے ہوئے تین سنچریوں اور سات نصف سنچریوں کی مدد سے ڈیڑھ ہزار سے زیادہ رنز بنائے ہیں۔

اسی بارے میں