کینیا کی کرکٹ ٹیم پاکستان پہنچ گئی

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption پاکستان اور کینیا کی ٹیم کے درمیان آخری بار سری لنکا میں مقابلہ ہوا تھا

کینیا کی کرکٹ ٹیم بدھ کی صبح لاہور پہنچ گئی ہے۔ اس دورے میں وہ پاکستان اے کے خلاف پانچ ون ڈے میچز کھیلے گی۔

کینیا کی کرکٹ ٹیم کو انتہائی سخت حفاظتی انتظامات میں ایئرپورٹ سے قذافی سٹیڈیم سے متصل نیشنل کرکٹ اکیڈمی لایا گیا جہاں وہ قیام کرے گی۔

کینیا کی ٹیم سیریز کے پانچوں میچز قذافی سٹیڈیم میں کھیلے گی۔

کینیا کی ٹیم کے دورۂ پاکستان کا مقصد پاکستان میں انٹرنیشنل کرکٹ کو بتدریج شروع کرنا ہے جو تین مارچ سنہ 2009 میں سری لنکن کرکٹ ٹیم پر لاہور میں ہونے والے حملے کے بعد سے منقطع ہے اور کوئی بھی غیرملکی ٹیم پاکستان آکر انٹرنیشنل کرکٹ ميچ نہیں کھیلی ہے۔

اس دوران پاکستانی ٹیم کو اپنی ہوم سیریز متحدہ عرب امارات میں کھیلنی پڑرہی ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے بنگلہ دیشی کرکٹ بورڈ سے ٹیم پاکستان بھیجنے کے لیے مذاکرات کیے تھے لیکن بنگلہ دیش نے آئی سی سی کی صدارت کےلیے مصطفیٰ کمال کی حمایت حاصل ہونے کے باوجود اپنی ٹیم پاکستان بھیجنے سے انکار کردیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption آئی سی سی کینیا سے رواں سال ون ڈے انٹرنیشنل کرکٹ کا استحقاق واپس لے چکی ہے

پاکستان کرکٹ بورڈ نے گذشتہ سال ویسٹ انڈین کرکٹ بورڈ کو بھی اپنی اے ٹیم پاکستان بھیجنے کے لیے قائل کرنے کی کوشش کی تھی لیکن ویسٹ انڈین کرکٹ بورڈ نے انکار کردیا۔

پاکستان کرکٹ بورڈ کا کہنا ہےکہ کرکٹ آئرلینڈ اپنی ٹیم اس سال پاکستان بھیجنے پر آمادہ ہوگیا تھا لیکن کراچی ایئرپورٹ پر دہشت گردی کے واقعے نے یہ دورہ بھی نہ ہونے دیا۔اس تمام عرصے میں افغانستان کی کرکٹ ٹیم پاکستان آکر میچز کھیلتی رہی ہے تاہم وہ ون ڈے انٹرنیشنل نہیں تھے۔

کینیا اور پاکستان اے کے درمیان پہلا ون ڈے 13 دسمبر کو کھیلا جائے گا۔

کینیا کی ٹیم کو اس دورے سے آئی سی سی ورلڈ کرکٹ لیگ ڈویژن ٹو ایونٹ کی تیاری میں مدد ملے گی جو آئندہ ماہ نامیبیا میں ہوگا۔

آئی سی سی کینیا سے رواں سال ون ڈے انٹرنیشنل کرکٹ کا استحقاق واپس لے چکی ہے۔

اسی بارے میں