انگلیڈ: کُک کی جگہ اوون مورگن ون ڈے کپتان

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption الیسٹر کُک کو 2011 میں ون ڈے ٹیم کا کپتان بنایا گیا تھا

انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ نے الیسٹر کُک کو ہٹا کر اُن کی جگہ اوون مورگن کو ون ڈے ٹیم کا کپتان مقرر کر دیا ہے۔

یہ تبدیلی ورلڈ کپ سے صرف دو مہینے پہلےکی گئی ہے جس سے قبل 2011 میں کُک کو ون ڈے ٹیم کا کپتان مقرر کیا گیا تھا۔

سرلنکا سے سیریز میں شکست کے بعد کُک مُصر تھے کہ وہ استعفیٰ نہیں دیں گے مگر سلیکٹرز نے جمعے کو اپنے اجلاس میں اس بات کا فیصلہ کر دیا۔

مورگن نے اپنے کریر کا آغاز آئرلینڈ سے کیا تھا جس کے بعد انہوں نے انگلینڈ کے لیے 107 ون ڈے میچز کھیلے۔

کُک کی ون ڈے میں کپتانی کے دور کا خاتمہ ایک مشکل سال میں ہو رہا ہے جس میں انہوں نے ایشز کی سیریز 5 صفر سے ہاری۔

تاہم انہوں نے اپنی ٹیسٹ فارم بہتر کی اور جس کے نتیجے میں انڈیا سے سیریز 3 ایک سے جیتی مگر کُک پر ون ڈے کی کپتانی چھوڑنے کا دباؤ انڈیا ہی کے خلاف 3 ایک سے اپنے ہی ملک میں شکست اور سری لنکا کے ناکام دورے کے بعد بڑھتا گیا۔

اگرچہ انگلینڈ اور ویلز کرکٹ بورڈ کے سربراہ پال ڈاؤنسیڈ نے کہا کہ تھا کہ انہیں ’حیرت‘ ہو گی اگر کُک کو ورلڈ کپ سے پہلے تبدیل کیا گیا تاہم چار رکنی سلیکشن پینل میں ان کا ووٹ نہیں تھا۔

دوسری جانب کوچ پیٹر مورس اور سلیکٹرز جیمز وٹکر، مائک نیول اور اینگس فریزر نے کُک کی ورلڈ کپ کے لیے کپتانی کی گارنٹی دینے سے انکار کر دیا تھا۔

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service
Image caption اوون مورگن نے اپنے کریر کا آغاز آئرلینڈ سے کیا تھا جس کے بعد انہوں نے انگلینڈ کے لیے 107 ون ڈے میچز کھیلے۔

اس کے علاوہ سابق کپتانوں ناصر حسین، ایلک سٹیورٹ اور مائیکل وون نے کُک کو کپتان کے طور پر بدلنے کا کہا۔

کُک کو اپنے دورِ کپتانی میں ابتدا میں تو کامیابی ملی مگر انڈیا سے چیمپئنز ٹرافی کی جیت کے بعد ان کی کامیابی کا گراف نیچے جاتا گیا۔

کُک نے 69 ون ڈے میچز بطور کپتان کھیلے جن میں سے 36 جیتے، 30 ہارے، ایک میں میچ برابر رہا اور دو میں میچ بے نتیجہ رہا۔