’حیض سے خواتین کھلاڑیوں کی کارکردگی متاثر ہوتی ہے‘

مختلف کھیلوں میں حصہ لینے والی خواتین حیض کے دوران کس طرح کارکردگی کا مظاہرہ کرتی ہیں۔

ٹینس کھلاڑی، اینا بیل کرافٹ

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

برطانیہ کی سابق ٹینس کھلاڑی اینا بیل کرافٹ نے ’اسے آخری ٹیبو‘ قرار دیا تھا۔ وہ اپنی حیض کے بارے میں بات کر رہی تھیں۔

ان کا یہ بیان اس وقت سامنے آیا جب ہیدر واٹسن نے تسلیم کیا کہ وہ آسٹریلین اوپن کے پہلے راؤنڈ سے اسی لیے باہر ہو گئی تھیں کیونکہ وہ ان دنوں اُن کی حیض کا آغاز ہو گیا تھا۔

22 سالہ واٹسن نے بی بی سی کو بتایا کہ انھیں حیض کے دوران چکر آتے ہیں، متلی ہوتی ہے، کمزوری محسوس ہوتی ہے یہاں تک کہ ان کے سر میں ہلکا درد بھی رہتا ہے۔

فٹبال مینیجر، شیلی کیر

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

آرسنل لیڈیز کا مینیجر بننے سے پہلے شیلی کیر ایک کھلاڑی کے طور پر سکاٹ لینڈ کی ٹیم کی کپتان رہ چکی ہیں۔

اب وہ سٹرلنگ یونیورسٹی کی مردوں کی ٹیم کی کوچ ہیں۔

انھوں نے بی بی بی نیوز بِیٹ کو بتایا کہ ایک کھلاڑی کے طور پر حیض یقیناً ان کی کارکردگی کو متاثر کرتی ہے اور آپ 100 فیصد توانا محسوس نہیں کرتے۔

ایک سابق بین الاقوامی کھلاڑی کے طور پر اگر آپ بہت زیادہ سخت پریکٹس کریں گے تو اس سے آپ کا جسمانی عمل خراب ہو گا۔

فٹبال کھلاڑی، سو سمتھ

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

35 سالہ فٹبال کھلاڑی سو سمتھ ڈونکاسٹر کی جانب سے لیفیٹ ونگ کی پوزیشن پر کھیلتی ہیں۔

انھوں نے نیوز بِیٹ کو بتایا کہ اس سے پہلے حیض سے متعلق بات کرنا معیوب سمجھتا جاتا تھا تاہم اب ایسا نہیں ہے اور لوگ اس بارے میں کھل کر بات کرتے ہیں۔

انھوں نے کہا کہ میں اس حوالے سے خوش قسمت ہوں کہ حیض کے وقت مجھے زیادہ درد نہیں ہوتا۔

نیٹ بال کھلاڑی، کولیٹ کوپر

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

کولیٹ کوپر برطانیہ کی نیٹ بال ٹیم کو تربیت دیتی ہیں۔ انھوں نے کھیلوں میں حصہ لینے والی خواتین کو حیض کے حوالے سے پیش آنے والے مسائل کے بارے میں کہا کہ اس سے خواتین کی کارکردگی یقینی طور پر متاثر ہوتی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ حیض کے دوران خواتین تھک جاتی ہیں، انھیں کمزوری محسوس ہوتی ہے۔

انھوں نے اپنے بارے میں بتایا کہ حیض کے دوران ان کی کارکردگی بہت زیادہ متاثر ہوتی ہے۔

انھوں نے مزید کہا کہ یہ ٹیبو نہیں ہے کیونکہ ایسا ہر ماہ ہوتا ہے اور اس سے مختلف کھیلوں میں حصہ لینے والی خواتین کی کارکردگی متاثر ہوتی ہے۔

فیلڈ ہاکی کھلاڑی کیٹ رچرڈسن والش

تصویر کے کاپی رائٹ BBC World Service

کیٹ رچرڈسن انگلینڈ کی خواتین ہاکی ٹیم کی کپتان ہیں۔

انھوں نے مختلف کھیلوں میں حصہ لینے والی خواتین کی حیض کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہ اعلیٰ ترین گیمز میں چھوٹی چھوٹی چیزوں کے باعث شکست ہو سکتی ہے اس لیے اس قسم کی پریشانیاں جتنی کم ہوں اتنا ہی اچھا ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ زیادہ محنت کرنے والی خواتین کو حیض کے دوران زیادہ مسائل ہوتے ہیں۔

نیٹ بال کھلاڑی تسمین گرین وے

تسمین گرین وے انگلینڈ کی نیٹ بال ٹیم کی رکن ہیں اور وہ عام طور پر ونگ اٹیک یا گول اٹیک پوزیشن پر کھیلتی ہیں۔

ان کا سپورٹس خواتین کی حیض کے بارے میں کہنا تھا کہ کھیل کے دوران ان کا کارکردگی متاثر ہوتی ہے۔

انھوں نے کہا کہ حیض کے دوران دوائی کھانے سے حیض کے مسائل کو کچھ حد تک کنٹرول کیا جا سکتا ہے۔

ہیڈ کوچ آف دی لندن ایکوئٹکس سینٹر، لیسا بیٹس

لیسا بیٹس اولمپک میں حصہ لینے والی خواتین تیراکوں کو تربیت دیتی ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ خواتین ایتھلیٹس کے لیے ہائی آئرن خوراک بہت ضروری ہے۔

ان کا کہنا ہے کہ خواتین تیراکوں کو حیض کےدوران اپنے کھانے میں آئرن کی مقدار کو بڑھا دینا چاہیے اور اس کے ساتھ وٹامن سی کی ایک گولی بھی کھانی چاہیے۔

جمناسٹک ٹرینر، کلیئر سٹار

کلیئر سٹار جمناسٹک میں برطانیہ کی نمائندگی کرتی ہیں اور اس کے ساتھ ساتھ وہ جمناسٹک ٹرینر بھی ہیں۔

انھوں نے 12 سے 22 سال کی درجنوں لڑکیوں کو تربیت دی ہے۔

انھوں نے کہا کہ عموماً 12 سال کی عمر سے لڑکیوں میں حیض شروع ہوتی ہے۔

کلیئر سٹار نے بتایا کہ انھیں دو ایسی جمناسٹ کھلاڑیوں کے بارے میں معلوم ہے جنھیں حیض کے دوران بہت سے مسائل ہوتے ہیں۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ وہ اس حوالے سے کوئی بھی نصیحت نہیں کر سکتیں۔

اسی بارے میں