کوہلی کی صحافی سے بدکلامی اور پھر معافی

وراٹ کوہلی تصویر کے کاپی رائٹ AFP GETTY
Image caption کسی کو بھی کچھ سمجھ میں نہیں آیا اور وراٹ کوہلی اچانک انھیں گالیاں دینے لگے۔

بھارتی کرکٹ ٹیم کے نائب کپتان نے ایک صحافی کو گالیاں دینے پر معذرت طلب کی ہے۔

کھیل کے میدان میں جارحانہ بیٹنگ کے لیے مشہور بھارتی کرکٹ ٹیم کے نائب کپتان وراٹ کوہلی اس بار مخالف ٹیم کے کھلاڑیوں پر غصہ کرنے کے لیے نہیں بلکہ ایک صحافی کو گالی دینے کی وجہ سے خبروں میں ہیں۔

تفصیلات کے مطابق یہ واقعہ پرتھ میں جاری پریکٹس سیشن کے دوران پیش آیا جہاں بھارتی خبر رساں ادارہ پی ٹی آئی کے مطابق وراٹ کوہلی ٹریننگ کے بعد جب اپنے ڈریسنگ روم کی طرف لوٹ رہے تھے تو انھوں نے ایک بھارتی اخبار کے صحافی کو اپنے سامنے دیکھا۔

کسی کو بھی کچھ سمجھ میں نہیں آیا اور وراٹ کوہلی اچانک انھیں گالیاں دینے لگے۔

وراٹ کوہلی ایسی زبان کا استعمال کر رہے تھے کہ وہاں موجود صحافیوں کو اور نہ ہی ان کے دیگر ساتھی کھلاڑیوں کی سمجھ میں آیا کہ آخر ہوا کیا ہے۔

جس صحافی کو غصے میں وراٹ کوہلی گالیاں دے رہے تھے وہ بھی کچھ سمجھ نہیں پائے کا آخر ماجرا کیا ہے۔

لیکن جب کوہلی کا غصہ ٹھنڈا ہوا تو انہوں نے بتایا کہ دراصل وہ ایک اخبار میں اپنے اور اپنی گرل فرینڈ انوشكا شرما سے متعلق شائع ایک خبر کی وجہ سے ناراض تھے اور انہوں نےسمجھا کہ اسی صحافی نے وہ مضمون لکھا ہے۔

لیکن جب وراٹ کوہلی کو یہ بتایا گیا کہ جس صحافی کو وہ گالی دے رہے تھے انھوں نے وہ مضمون نہیں لکھا تھا تو پھر کوہلی نے ایک اور صحافی کو بلایا اور ان کے توسط سے اس واقعے پر معذرت بھجوائی۔

پی ٹی آئی نے بعض ذرائع کے حوالے سےبتایا ہے کہ بھارتی ٹیم کے ڈائریکٹر روی شاستری نے اس معاملے پر وراٹ کوہلی سے بات کی ہے اور انہیں مشورہ دیا ہے کہ وہ ضبط و تحمل سے کام لیں۔

آسٹریلیا میں جاری عالمی کپ میں بھارتی ٹیم اپنا اگلا میچ جمعہ کو ویسٹ انڈیز کے خلاف کھیلنے والی ہے۔

اسی بارے میں