پاکستان کی کرکٹ ورلڈ کپ میں لگاتار دوسری فتح

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption شیمان انور نے ایک مرتبہ پھر ذمہ دارانہ انداز میں بلے بازی کی اور نصف سنچری بنائی

کرکٹ ورلڈ کپ کے پول بی کے ایک میچ میں پاکستان نے متحدہ عرب امارات کے خلاف 129 رنز سے کامیابی حاصل کر لی ہے۔

یہ اس ٹورنامنٹ میں پاکستان کی چار میچوں میں دوسری فتح ہے اور اس کی اگلے مرحلے تک رسائی کی امید برقرار ہے۔

میچ کا تفصیلی سکور کارڈ

پاکستان بمقابلہ متحدہ عرب امارات: تصاویر

نیپئر میں کھیلے جانے والے اس میچ میں پاکستان نے فتح کے لیے 340 رنز کا ہدف دیا جس کے تعاقب میں متحدہ عرب امارات کی ٹیم آٹھ وکٹوں کے نقصان پر 210 رنز ہی بنا سکی۔

یو اے ای کے ان فارم بلے باز شیمان انور نے ٹورنامنٹ میں ایک اور نصف سنچری بنائی جبکہ آخری اوورز میں امجد جاوید نے جارحانہ بلے بازی کرتے ہوئے 40 رنز بنائے۔

پاکستان نے آغاز میں ہی یو اے ای کے تین کھلاڑی آؤٹ کر لیے تھے لیکن پھر چوتھی وکٹ کے لیے شیمان انور اور خرم خان نے 83 رنز کی شراکت قائم کی۔

اننگز کے آخر میں امجد علی اور سواپنل پٹیل کی 68 رنز کی شراکت نے یو اے ای کا سکور بڑھانے میں اہم کردار ادا کیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption احمد شہزاد سات رنز کی کمی سے سنچری مکمل نہ کر سکے اور رن آؤٹ ہوگئے۔

پاکستان کی جانب سے وہاب ریاض، سہیل خان اور شاہد آفریدی نے دو، دو وکٹیں لیں جبکہ راحت علی اور صہیب مقصود نے ایک ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا۔

یہ اس ٹورنامنٹ میں شاہد آفریدی کی پہلی دو وکٹیں تھیں۔ گذشتہ میچوں میں ان کی بولنگ پر عمر اکمل نے تین کیچ گرا کر انھیں وکٹ سے محروم رکھا تھا۔

انھیں ایک روزہ کرکٹ میں چار سو وکٹیں مکمل کرنے کے لیے اب مزید چھ وکٹیں درکار ہیں۔

پاکستانی بلے باز بالاخر چل ہی پڑے

اس سے قبل متحدہ عرب امارات کے کپتان محمد توقیر نے ٹاس جیت کر پاکستان کو پہلے کھیلنے کی دعوت دی تو پاکستان نے پہلے کھیلتے ہوئے مقررہ 50 اوورز میں چھ وکٹوں کے نقصان پر 339 رنز بنائے۔

ورلڈ کپ میں اب تک ناکام رہنے والے پاکستانی بلے بازوں نے اس میچ میں بہتر کارکردگی دکھائی اور اننگز کے آخری دس اووز میں 124 رنز بنے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption حارث سہیل نے پراعتماد انداز میں بیٹنگ کرتے ہوئے نصف سنچری بنائی ہے

پاکستان کے لیے اس میچ میں جہاں پہلے احمد شہزاد اور حارث سہیل نے اس ورلڈ کپ میں پاکستان کی جانب سے پہلی 100 رنز کی شراکت قائم کرتے ہوئے نصف سنچریاں بنائیں وہیں آخر میں مصباح الحق نے صہیب مقصود کے ساتھ مل کر ٹیم کو ایک اچھے سکور تک پہنچنے میں مدد دی۔

حارث پانچ چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 70 رنز بنانے کے بعد آؤٹ ہوئے جبکہ احمد سات رنز کی کمی سے سنچری مکمل نہ کر سکے۔ان دونوں نے دوسری وکٹ کے لیے 160 رنز کی شراکت قائم کی۔

مصباح نے ایک روزہ کرکٹ میں 41ویں نصف سنچری بنائی جبکہ صہیب مقصود 31 گیندوں پر 45 رنز کی جارحانہ اننگز کھیل کر آؤٹ ہوئے۔

شاہد آفریدی نے آخری چند اوورز میں کچھ جارحانہ شاٹس کھیلیں اور سات گیندوں پر 21 رنز بنانے کے ساتھ ساتھ ایک روزہ کرکٹ میں اپنے آٹھ ہزار رنز مکمل کیے۔ وہ یہ اعزاز حاصل کرنے والے چوتھے پاکستانی بلے باز ہیں۔

ورلڈ کپ میں لگاتار چوتھے میچ میں بھی پاکستانی اوپنر ناصر جمشید ایک بار پھر ناکام رہے اور چوتھے اوور میں صرف تین رنز بنا کر پویلین لوٹ گئے۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ناصر جمشید نے ورلڈ کپ کے تین میچوں میں صرف چار رنز بنائے ہیں اور ہر بار پل شاٹ کھیلتے ہوئے آؤٹ ہوئے ہیں

ناصر جمشید نے اس ورلڈ کپ کے تین میچوں میں صرف چار رنز بنائے ہیں اور ہر بار بار پُل شاٹ کھیلتے ہوئے آؤٹ ہوئے ہیں۔

متحدہ عرب امارات کی جانب سے گورگے چار وکٹوں کے ساتھ سب سے کامیاب بولر رہے۔ ان کے علاوہ محمد نوید نے ایک کھلاڑی کو آؤٹ کیا۔

پاکستان نے زمبابوے کےخلاف کھیلنے والی ٹیم میں کوئی تبدیلی نہیں کی ہے۔ توقع کی جا رہی تھی کہ پاکستان ریگولر وکٹ کیپر سرفراز احمد اور لیگ سپنر یاسر شاہ کو ٹیم میں شامل کرے گا لیکن ایسا نہیں ہوا۔

پاکستانی ٹیم: احمد شہزاد، ناصر جمشید، حارث سہیل، مصباح الحق، عمر اکمل، زوہیب مسعود، شاہد آفریدی، وہاب ریاض ، سہیل خان، راحت علی، محمد عرفان۔

متحدہ عرب امارت کی ٹیم: امجد علی، اے آر برینجر، کرشنا چندران، خرم خان، شائمان انور، ایس پی پٹیل، روہن مصطفیٰ ، امجد جاوید، محمد نوید، محمد توقیر اور اے ایم گرگی۔

اسی بارے میں