آٹھ سال پرانی شکست کی کسک

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption باب وولمر 2007 میں پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کوچ تھے

17 مارچ 2007 پاکستانی کرکٹ کی تاریخ کا ایک تکلیف دہ دن تھا جب ویسٹ انڈیز میں کھیلے گئے ورلڈ کپ کے میچ میں آئرلینڈ نے پاکستانی ٹیم کے پیروں تلے سے زمین سرکا دی تھی۔

تکلیف صرف شکست نے نہیں پہنچائی تھی بلکہ کہا جاتا ہے کہ کوچ باب وولمر کی موت بھی اسی شکست کا نتیجہ بنی تھی۔

یہی آئرلینڈ اب دوبارہ پاکستانی ٹیم کے کوارٹر فائنل میں جانے کی راہ میں حائل ہے۔

یہ میچ 15 مارچ کو ہونا ہے اور آئرلینڈ کے کھلاڑی آٹھ سال پرانی جیت کو دوبارہ دہرانے کے لیے تیار بیٹھے ہیں۔

دوسری جانب پاکستانی ٹیم اس تلخ یاد کو دل و دماغ سے دور رکھنا چاہتی ہے۔

آٹھ سال قبل آئرلینڈ کے ہاتھوں اس شکست کی کسک موجودہ ٹیم کے صرف دو لوگ آج بھی محسوس کرتے ہیں۔

یونس خان موجودہ ٹیم کے واحد کھلاڑی ہیں جو آٹھ سال قبل سبائنا پارک جمیکا میں وہ میچ کھیلے تھے جبکہ موجودہ بولنگ کوچ مشتاق احمد آٹھ سال قبل ورلڈ کپ میں پاکستان کے اسسٹنٹ کوچ تھے۔

یونس خان اس میچ میں کوئی رن بنائے بغیر آؤٹ ہوگئے تھے لیکن انھیں آج بھی اپنے آؤٹ ہونے سے زیادہ دکھ اس بات کا ہے کہ باب وولمر سے ان کا تعلق ختم ہو گیا۔

یونس خان کی خواہش ہے کہ اس بار پاکستانی ٹیم آئرلینڈ کو ہرائے اور وہ اس میچ میں بڑی اننگز کھیلیں تاکہ اسے باب وولمر کے نام کر سکیں جن سے وہ بہت محبت کرتے ہیں۔

یونس خان نے 2009 کے ورلڈ ٹی ٹوئنٹی کی جیت بھی باب وولمر کے نام کی تھی۔

مشتاق احمد کے لیے باب وولمر کی موت کے بعد کا وقت بہت کٹھن گزرا تھا جب جمیکا پولیس نے ان سے بھی پوچھ گچھ کی تھی اور پوری ٹیم کئی روز تک سخت پریشانی میں مبتلا رہی تھی۔

مشتاق احمد آٹھ سال پہلے کی شکست کو ماضی کا حصہ سمجھتے ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ سب کی توجہ اس میچ پر ہے جو اب کھیلنا ہے۔

’جو ہوگیا اسے یاد نہیں رکھنا۔ ہم ماضی کو یاد رکھنا نہیں چاہتے۔ اچھی ٹیمیں اور اچھے کھلاڑی پچھلے دنوں کو یاد نہیں رکھتے۔ ہماری توجہ موجودہ صورت حال کے مطابق اپنی حکمت عملی تیار کرنے پر مرکوز ہے۔‘

آئرلینڈ نے اس عالمی کپ میں ویسٹ انڈیز کو شکست دے کر اپنے عزائم ظاہر کر دیے اور پھر متحدہ عرب امارات اور زمبابوے کی ٹیمیں بھی اس کی زد میں آئیں۔

پاکستان اور آئرلینڈ کا میچ اس عالمی کپ کا آخری پول میچ بھی ہے اور دونوں میں کوئی بھی یہ نہیں چاہتا کہ یہ اس کا آخری میچ ثابت ہو۔

اسی بارے میں