’اب دباؤ ہم پر نہیں آسٹریلیا پر ہوگا‘

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption ’یہ وقت ریلکس ہونے کا نہیں ہے بلکہ اصل امتحان اب شروع ہوا ہے‘

پاکستانی کرکٹ ٹیم کے کپتان مصباح الحق کا کہنا ہے کہ کوارٹرفائنل میں دباؤ پاکستان پر نہیں بلکہ آسٹریلیا پر ہوگا۔

مصباح الحق کہتے ہیں کہ آئرلینڈ کے خلاف کھیلتے ہوئے دباؤ پاکستانی ٹیم پر تھا کیونکہ آئرلینڈ جیسی ٹیمیں جب ٹیسٹ ٹیموں کے خلاف کھیلتی ہیں تو دباؤ ان پر ہوتا ہے تاہم جب پاکستانی ٹیم کوارٹرفائنل میں آسٹریلیا سے کھیلے گی تو زیادہ دباؤ میزبان ٹیم پر ہوگا۔پاکستانی ٹیم میدان میں جائے گی اور اپنی پوری کوشش کرے گی کہ میچ جیتے۔

آسٹریلیا کے خلاف جیت کے امکانات کے بارے میں مصباح الحق کا کہنا ہے کہ ون ڈے میں ایک اچھا سپیل اور ایک اچھی اننگز میچ کا نقشہ بدل دیتی ہے اور پاکستان کے پاس بھی ایسا کرنے والے کھلاڑی موجود ہیں۔

مصباح الحق نے کہا کہ کوارٹرفائنل میں پہنچ جانے کا مطلب یہ نہیں ہے کہ ہم نے تیر مارلیا ہے۔ یہ وقت ریلکس ہونے کا نہیں ہے بلکہ اصل امتحان اب شروع ہوا ہے اوراگر ہم یہ سوچ رہے ہیں کہ ورلڈ کپ جیتیں تو یہ موقع ہے کہ اگلے میچوں میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کریں۔

مصباح الحق نے سرفراز احمد کی سنچری کے بارے میں کہا کہ سنہ 2007 کے بعد سے کوئی بھی پاکستانی بیٹسمین ورلڈ کپ میں سنچری نہیں بناسکا تھا لہذا انہوں نے اس میچ میں دونوں اوپنرز سے کہا تھا کہ سنچری سکور کرنے کا اچھا موقع ہے۔ بدقسمتی سے احمد شہزاد آؤٹ ہوگئے لیکن سرفراز احمد نے سنچری سکور کرلی۔

یونس خان کو آسٹریلیا کے خلاف کوارٹرفائنل میں کھلانے کے بارے میں مصباح الحق نے کہا کہ جو فیصلہ بھی ہوگا وہ ٹیم کے مفاد کو مدنظر رکھتے ہوئے کیا جائے گا۔ان کا کہنا تھا کہ یونس خان تجربہ کار بیٹسمین ہیں اور اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرسکتے ہیں۔

اسی بارے میں